یونیورسٹی لیکچرر گرفتار:سوشل میڈیا پر منافرت پھیلانے کا الزام

اختر خان وزیر عبدالولی خان یونیورسٹی کے پولیٹیکل سائنس ڈیپارٹمنٹ میں لیکچرر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دے رہے تھے جب کہ ان کا شمارپی ٹی ایم (پختون تحفظ موومنٹ) کے مرکزی رہنماؤں میں ہوتا ہے۔

لیکچرر اختر وزیر کے وکیل شہاب خٹک کے مطابق اختر وزیر کو سائبرکرائم کی دفعہ 10اور دفعہ 11 کے تحت گرفتار کر لیا گیا ہے۔

 

ایف آئی اے کی سائبر کرائم برانچ نے عبدالولی خان یونیورسٹی کے پولٹیکل سائنس ڈیپارٹمنٹ کے لیکچرراخترخان کو سوشل میڈیا پر مذہبی اور سیاسی منافرت پھیلانے کے الزام میں گرفتار کر لیا۔

ذرائع کے مطابق وزیرستان سے تعلق رکھنے والے اختر خان وزیر کو فیڈرل انویسٹیگیشن ایجنسی کی سائبرکرائم برانچ نے پیر اور منگل کی درمیانی شب کو علاقہ شیخ ملتون میں ان کی رہائش گاہ سے گرفتار کیا گیا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

اختر خان وزیر عبدالولی خان یونیورسٹی کے پولیٹیکل سائنس ڈیپارٹمنٹ میں لیکچرر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دے رہے تھے جب کہ ان کا شمارپی ٹی ایم (پختون تحفظ موومنٹ) کے مرکزی رہنماؤں میں ہوتا ہے۔

لیکچرر اختر وزیر کے وکیل شہاب خٹک کے مطابق اختر وزیر کو سائبرکرائم کی دفعہ 10اور دفعہ 11 کے تحت گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ان دفعات کے تحت کسی شخص کو اجازت نہیں ہے کہ وہ سوشل میڈیا پر مذہبی اور سیاسی منافرت پھیلائے۔

پولیٹیکل سائنس کے لیکچرر کو منگل کے روز پشاور کی عدالت میں جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے پیش کرنے کے بعد جوڈیشل ریمانڈ پر پشاور جیل منتقل کردیا گیا۔

زیادہ پڑھی جانے والی پاکستان