چترال: جڑی بوٹیوں سے تیل نکالنے کی پہلی فیکٹری لائسنس کی منتظر

پاکستان کی پہلی نباتی تیل نکالنے کی فیکٹری چترال میں قائم ہو چکی ہے جسے اپنی پیداوار شروع کرنے کے لیے وزارت صحت اور ڈرگ اتھارٹی کے لائسنس کا انتطار ہے۔

لاہور کے رہائشی اعجاز شریف جو بنیادی طور پر کیمیسٹ ہیں انہوں نے پاکستان میں پہلی نباتی تیل نکالنے کی فیکٹری چترال میں قائم کر دی ہے جسے اپنی پیداوار شروع کرنے کے لیے وزارت صحت اور ڈرگ اتھارٹی کے لائسنس کا انتطار ہے۔

اعجاز شریف کے مطابق ’اس سے پہلے پالستان میں اسینشل آئل (نباتی تیل) تیار کرنے کی کوئی فیکٹری نہیں تھی بلکہ یہ درآمد کرنا پڑتا تھا۔‘

اعجاز کے مطابق ’وزارت صحت اور ڈرگ اتھارٹی نے فیکٹری کا بنیادی معائنہ کرنے کے بعد جنوری 2022 میں فیکٹری کو لائسنس کا اجرا کرنا تھا۔‘

اس خبر کے تشر ہونے تک انڈپینڈنٹ اردو کو دستیاب اطلاعات کے مطابق متعلقہ حکام نے فیکٹری کا معائنہ مکمل کر لیا ہے اور چند ہفتوں میں لائسنس کا اجرا بھی ہو جائے گا۔

اعجاز نے انڈپینڈنٹ اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’چترال اور گلگت بلتستان میں نباتی تیل تیار کرنے کے لیے بہترین مواقع موجود ہیں اسی لیے انہوں نے فیکٹری لگانے کے لیے بھی اسی جگہ کا انتخاب کیا ہے۔‘

اعجاز نے بتایا کہ ’تقریباً چار سال پہلے ہم نے چترال میں جگہ منتخب کی تھی اور وہاں فیکٹری بنائی ہے۔ ہم پاکستان کی پہلی کمپنی ہیں جو وزارت صحت اور ڈرگ اتھارٹی سے رجسٹرڈ ہو گی۔‘

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

اعجاز نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا کہ ’ہم جو نباتی تیل بنا رہے ہیں اس کا سارا خام مال چترال میں وافر دستیاب ہے۔‘

بھنگ سے حاصل ہونے والے تیل سے متعلق اعجاز کا کہنا تھا کہ ’بھنگ میں سے جو تیل نکلتا ہے اسے سی بی ڈی آئل کہتے ہیں۔ یہ سرطان کے خلاف، خاص کر چھاتی کے سرطان کے خلاف ثابت شدہ دوا ہے۔‘

بھنگ کے پودے کے دیگر فوائد بتاتے ہوئے اعجاز کا کہنا تھا کہ ’اس کے علاوہ بہت کم لوگ شاید جانتے ہیں کہ بھنگ سے کپڑا بہت اچھا بنتا ہے۔ کپڑا اتنا قیمی ہوتا ہے کہ اگر سردیوں میں پہنیں تو گرم احساس دیتا ہے۔ اگر گرمیوں میں پہنیں تو ٹھنڈک کا احساس دیتا ہے۔‘

یاد رہے کہ موجودہ حکومت بھنگ کی کاشت پر خصوصی توجہ دے رہی ہے جس پر وفاقی وزیر شبلی فراز متعدد بار بیانات بھی دے چکے ہیں کہ بھنگ کی کاشت پاکستان میں بہت سے کیمیکل اور ادویات میں استعمال کے لیے فائدہ مند ثابت ہو گی۔

زیادہ پڑھی جانے والی پاکستان