ویمنز ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ: پاکستان کا پہلا میچ آج

بسمہ معروف کی قیادت میں پاکستان ویمنز کرکٹ ٹیم تاریخ میں پہلی مرتبہ ایونٹ کے سیمی فائنل تک رسائی حاصل کرنے کے لیے پرامید ہے۔

قومی خواتین کرکٹ ٹیم 26 فروری کو کینبرا میں اپنا پہلا میچ کھیلنے کے بعد 28 فروری کو اسی میدان  میں   انگلینڈ کے خلاف میچ کھیلےگی (تصویر: پی سی بی)

آسٹریلیا میں ہونے والے آئی سی سی ویمنز ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں پاکستان اپنا پہلا میچ آج (26 فروری کو) ویسٹ انڈیز کے خلاف کھیلے گا۔

آئی سی سی ویمنز ٹی ٹوئنٹی ورلڈ رینکنگ میں پاکستان ساتویں اور ویسٹ انڈیز پانچویں نمبر پر ہے۔ انفرادی رینکنگ میں بسمہ معروف دنیا کی گیارہویں بہترین بلے باز اور انعم امین تیرہویں بہترین بولر ہیں۔

ورلڈ کپ ایونٹ میں کُل 23 میچز کھیلے جائیں گے جہاں دنیا بھر کے 10 بہترین ممالک کی ٹیمیں عالمی چیمپیئن بننے کی اس جنگ میں صف آرا ہوں گی۔

میزبان آسٹریلیا کی ویمنز کرکٹ ٹیم ایونٹ میں اپنے ٹائٹل کا دفاع کرے گی۔

21 فروری سے شروع ہونے والا یہ ایونٹ آٹھ مارچ تک آسٹریلیا کے چار شہروں، سڈنی، پرتھ، کینبرا اور میلبرن میں کھیلا جائے گا جبکہ فائنل خواتین کے عالمی دن کے موقع پر میلبرن کرکٹ گراؤنڈ میں کھیلا جائے گا۔

قومی خواتین کرکٹ ٹیم میگا ایونٹ کے گروپ بی کا حصہ ہے۔ گروپ بی میں شامل دیگر ٹیموں میں انگلینڈ، جنوبی افریقہ، تھائی لینڈ اور ویسٹ انڈیز کی ویمنز ٹیمیں شامل ہیں۔

قومی خواتین کرکٹ ٹیم 26 فروری کو کینبرا میں اپنا پہلا میچ کھیلنے کے بعد 28 فروری کو اسی میدان میں انگلینڈ کے خلاف میچ کھیلے گی، جس کے بعد قومی خواتین کرکٹ ٹیم سڈنی روانہ ہوجائے گی جہاں وہ یکم مارچ کو جنوبی افریقہ اور تین مارچ کو تھائی لینڈ کے خلاف میدان میں اترے گی۔ 

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

بسمہ معروف کی قیادت میں پاکستان ویمنز کرکٹ ٹیم تاریخ میں پہلی مرتبہ ایونٹ کے سیمی فائنل میں رسائی حاصل کرنے کے لیے پرامید ہے۔

مسلسل ساتویں ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں پاکستان کی نمائندگی کا اعزاز حاصل کرنے والی بسمہ معروف پہلی مرتبہ عالمی کپ میں پاکستان خواتین کرکٹ ٹیم کی قیادت کریں گی۔ میگا ایونٹ کے لیے نیشنل ویمنز سکواڈ میں بسمہ معروف (کپتان)، ایمن انور، عالیہ ریاض، انعم امین، عائشہ نسیم، ڈیانا بیگ، فاطمہ ثنا، ارم جاوید، جویریہ خان، منیبہ علی، ندا ڈار، عمیمہ سہیل، سعدیہ اقبال، سدرہ نواز (وکٹ کیپر) اور سیدہ عروب شاہ شامل ہیں۔

آئی سی سی ویمنز ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2018 سے لے کر اب تک پاکستان ویمنز کرکٹ ٹیم کُل 14 ٹی ٹوئنٹی میچوں میں شرکت کرچکی ہے، جن میں سے پاکستان کو چھ میں کامیابی اورسات میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اس دوران پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان ایک میچ ابتدائی طور پر برابر رہا جو بعدازاں ویسٹ انڈیز ویمنز ٹیم نے سپر اوورمیں اپنے نام کرلیا۔

تاحال آئی سی سی ویمنز ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں پاکستان کی جانب سے کسی بھی بلے باز کی بہترین  اننگز 74 رنز ناٹ آؤٹ ہے۔ جویریہ خان نے یہ ریکارڈ گذشتہ ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ میں آئرلینڈ کے  خلاف بنایا تھا۔ انہوں نے 52 گیندوں پر 74 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیل کر ٹیم کی جیت میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

محدود طرز کی کرکٹ میں پاکستان کی جانب سے بہترین بولنگ کا اعزاز انعم امین کو حاصل ہے۔ انہوں نے آئی سی سی ویمنز ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2016 کے دوران ویسٹ انڈیز کے خلاف راؤنڈ میچ میں شاندار بولنگ کرتے ہوئے 16 رنز کے عوض چار کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی تھی۔ دونوں ٹیموں کے درمیان میچ چنئی میں کھیلا گیا تھا۔

اس موقع پر کسی بھی آئی سی سی ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ میں پاکستان کی جانب سے بہترین بولنگ کا اعزاز رکھنے والی سپنر انعم امین ایونٹ میں شرکت کے حوالے سے بہت پرجوش ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ابتدائی طور پر ان کا ہدف پاکستان کو سیمی فائنل میں رسائی دلوانا ہے۔

بائیں ہاتھ کی سپنر کا مزید کہنا ہے کہ وہ ایونٹ میں شاندار کارکردگی کا عزم لیے میدان میں اتریں گی۔ انہوں نے کہا کہ وہ فی الحال خواتین بولرز کی عالمی رینکنگ میں تیرہویں نمبر پر موجود ہیں مگر وہ شاندار بولنگ کے ذریعے  دنیائے کرکٹ کی دس بہترین خواتین سپنرز میں شامل ہونا چاہتی ہیں۔

انعم امین نے کہا کہ انہیں بچپن سے کرکٹ سے محبت ہے۔ ابتدائی طور پر انہوں نے محلے کے لڑکوں کے ساتھ ٹیپ بال کرکٹ کھیلنا شروع کی لیکن والدہ کی ڈانٹ کے باوجود کھیل سے لگن ان کے شوق کی پذیرائی کا سبب بنی۔

سپنر انعم امین نے مزید کہا کہ اس دوران ان کے دادا نے انہیں بھرپور سپورٹ فراہم کی۔

زیادہ پڑھی جانے والی کرکٹ