بادشاہ

جب سوز خوانی سے بارش برس پڑی

زندے صاحب نے رباعی کا پہلا مصرعہ پڑھا تو انہوں نے سر اٹھا کر بے ساختہ داد دی۔ دیکھنے والے بڑے حیران ہوئے کہ آج انہیں کیا ہوا ہے۔ دوسری طرف وہ ہر چیز سے بے خبر تھے، وہ بس شامیانے سے باہر آسمان کی طرف بار بار دیکھتے تھے اور بے خود، داد دیتے جاتے تھے۔