اولینا زیلنسکی کے ووگ فوٹو شوٹ پر ’سچے جوابات‘

تصویروں میں سے ایک میں، اولینا نے اپنے بحریہ کے نیلے رنگ کے ٹرینچ کوٹ کا کالر پکڑا ہوا ہے جس میں جنگ زدہ مشینری کے پس منظر میں یوکرین کے پرچم کے رنگ ہیں۔

ووگ میگزین میں شائع ہونے والی تصاویر میں سے صدارتی جوڑے کی ایک تصویر (ووگ/عینی لبوٹز)

قدامت پسند چوں کہ پوچھ رہے ہیں کہ اولینا اور ان کے شوہر کے پاس فیشن میگزین کے لیے دلکش تصاویر بنانے کا وقت کیوں ہے، آئیے انہیں ایک ایمان دارانہ جواب دیں۔

یہ کہنا مناسب ہوگا کہ اولینا کے ووگ میگزین کور نے کچھ تنازعہ کھڑا کر دیا ہے۔ ’بہادری کی تصویر: یوکرین کی خاتون اول‘ کے عنوان سے ڈیجیٹلی جاری کردہ تصاویر کے مجموعے نے آن لائن ملے جلے ردعمل کو جنم دیا ہے۔

تصویروں میں سے ایک میں اولینا نے اپنے بحریہ کے نیلے رنگ کے ٹرینچ کوٹ کا کالر پکڑا ہوا ہے جس میں جنگ زدہ مشینری کے پس منظر میں یوکرین کے پرچم کے رنگ ہیں۔ دنیا کا سب سے بڑا کارگو طیارہ تصویر میں فروری میں روسی گولہ باری کے دوران اس کے ہینگر میں تباہ ہو گیا تھا۔ فریم میں تین یوکرینی فوجی بھی قید ہیں۔

ایک اور منظر میں دکھایا گیا ہے کہ اولینا زیلنسکی محل میں سیڑھیوں پر بیٹھی ہیں، ان کے پیچھے درجنوں ریت کی بوریاں ہیں۔ ان کے مسحور کن انداز اور جنگ کی منظر کشی کا امتزاج پریشان کن ہے۔

اولینا روایتی ’خاتون اول‘ بننے کی خواہش کے بارے میں کھل کر بولتی رہی ہیں۔ اپنے سابق کامیڈین شوہر کی طرح، انہوں نے فنون لطیفہ میں اپنا کیریئر بنایا۔ وہ ہائی سکول میں اب کے صدر وولودی میر زیلنسکی سے ملیں اور 2019 میں اپنے شوہر کے صدارت جیتنے سے پہلے ایک سکرین رائٹر بن گئیں۔

اولینا نے ووگ کو بتایا: ’میں نے ان کے انتخاب کا احترام کیا اور میں سمجھ گئی کہ یہ ان کے لیے ایک اہم قدم تھا۔ اسی وقت میں نے محسوس کیا کہ میری زندگی اور میرے خاندان کی زندگی کافی حد تک بدل جائے گی۔ یہ تبدیلی دیرپا اور کافی پیچیدہ ہوگی۔‘

ان کے بچوں نے مہینوں سے اپنے باپ کو نہیں دیکھا۔ ان کا بیٹا، جو کبھی اپنے والدین کی طرح تفریحی کیریئر میں دلچسپی رکھتا تھا۔ انہوں نے این بی سی کو بتایا کہ اب وہ ایک فوجی بننا چاہتا ہے اور اولینا کا ہر قدم سپاٹ لائٹ میں ہے۔

ووگ کی طرف سے ڈیجیٹل فوٹو شوٹ شائع ہونے کے بعد ریپبلکن کانگریس وومن لارین بوئبرٹ نے یوکرین کے صدارتی جوڑے کی ایک تصویر کو ایک سخت پیغام کے ساتھ ٹویٹ کیا: ’جب کہ ہم یوکرین کو 60 ارب ڈالر کی امداد بھیج رہے ہیں، زیلنسکی ووگ میگزین کے لیے فوٹو شوٹ کر رہے ہیں۔ یہ لوگ سوچتے ہیں کہ ہم بےوقوف جتھے کے سوا کچھ نہیں ہیں۔‘

ان جذبات کی بازگشت قدامت پسند کارکن سکاٹ پریسلر کے بیان میں بھی سنائی دی جنہوں نے سوال کیا کہ اولینا کے پاس فوٹو شوٹ کے لیے وقت کیوں ہے جب اس کا ملک ابھی جنگ میں ہے۔

چوں کہ انہوں نے پوچھا، آئیے جواب کے بارے میں سچے بنیں۔ جب جنگ شروع ہوئی، مغرب نے اور سب سے زیادہ بیانات کے طور پر امریکہ نے یوکرینیوں کی غیر متزلزل حمایت کا وعدہ کیا لیکن گذشتہ چند ہفتوں میں ملک خبروں اور سوشل میڈیا کے ایجنڈے سے دور ہو گیا ہے۔

مشہور شخصیات کم بول رہی ہیں۔ طاقتور کمپنیاں اب پیسے اور مدد کا وعدہ نہیں کر رہی ہیں جو وہ پہلے کرتی تھیں۔

مارچ میں جو بائیڈن سے یوکرین کے لیے مزید کام کرنے کی التجا کرنے کے بعد، کئی امریکی سینیٹرز نے محصور ملک کے لیے 40 ارب ڈالر کے انسانی پیکج کے خلاف ووٹ دیا۔ بل بالآخر منظور ہو گیا لیکن متفقہ فیصلے کی کمی کو حمایت میں کمی کی علامت کے طور پر دیکھا گیا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

قانون ساز جنہوں نے کبھی یوکرین کے رہنماؤں اور شہریوں کو ہیرو کے طور پر سراہا تھا اب جنگ زدہ ملک میں بائیڈن کے ’ضرورت سے زیادہ‘ اخراجات کو مسترد کرتے ہوئے، گیس پمپ پر امریکہ کی اپنی (مقابلہ طور پر چھوٹی) پریشانیوں کا حوالہ دیتے ہوئے۔ بائیڈن کو حال ہی میں ایسوسی ایٹڈ پریس کے ساتھ ایک انٹرویو میں یوکرین کے لیے اپنی حمایت کا دفاع کرنے پر مجبور کیا گیا تھا۔

زیلنسکی ایک سابق ٹی وی سٹار جنہوں نے سیاست میں آنے اور کامیابی کے ساتھ صدر کے لیے انتخاب لڑنے کے لیے اپنی ہی شہرت کا فائدہ اٹھایا۔ وہ ایک اچھے وقت پر میڈیا پر جانے کی طاقت کو جانتے ہیں۔ اسی طرح ان کی بیوی بھی۔ درحقیقت، اپنے ملک کو بین الاقوامی میڈیا کی دلچسپی رکھنا ان کی جنگی کوششوں کے لیے بہت ضروری ہے۔ جب یوکرین ہمارے ذہنوں سے کھسک جاتا ہے تو صرف روس کو فائدہ ہوتا ہے۔

ووگ میں اولینا کی تصاویر پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ہمیں بھی اس بات پر غور کرنا چاہیے کہ ہم جنگی علاقوں میں لوگوں سے ایک خاص طریقے سے دیکھنے اور برتاؤ کی توقع کیوں رکھتے ہیں۔

یوکرین میں زمین پر زندگی مشکل ہے، بلاشبہ، لیکن مصائب میں ہے۔ جو لوگ تنازعات میں رہتے ہیں وہ اب بھی فیشن سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں، لطیفے سن سکتے ہیں، تصویریں کھینچ سکتے ہیں اور سطحی موضوعات پر بات کر سکتے ہیں۔

جنگ کے وقت کی صدر اور خاتون اول کی حیثیت سے قیادت کرنا اور سفارت کاری اور پالیسی پر کام کرنے اور اپنی ذاتی حفاظت کے بارے میں فکر کرنے میں بہت زیادہ وقت صرف کرنا ممکن ہے۔

کیمرہ پر قید کیا گیا گلیمر کا ایک لمحہ مہینوں سے جاری جنگ کو باطل نہیں کرتا اور ایسا کہنے سے صرف پوتن کو فائدہ ہوتا ہے۔

© The Independent

زیادہ پڑھی جانے والی سٹائل