پیجو 2008 پاکستان کب آئے گی اور قیمت کیا ہوگی؟

دنیا کی دوسری پرانی ترین کارساز کمپنی پیجو (صحیح تلفظ پوژو) 1810 میں چھتریاں، کافی مشینیں، آرے اور اسی قسم کا دوسرا سامان بناتی تھی۔ 

پیجو 2008  میں سات انچ فلوٹنگ انفوٹینمنٹ ٹچ سکرین سمیت  سنگل زون آٹو کلائمیٹ کنٹرول دیا گیا ہے (تصاویر: کیا آسٹریلیا ویب سائٹ)

دنیا کی دوسری پرانی ترین کارساز کمپنی پیجو (صحیح تلفظ پوژو) 1810 میں چھتریاں، کافی مشینیں، آرے اور اسی قسم کا دوسرا سامان بناتی تھی۔ 
فرانسیسی کمپنی پیجو نے 1850 میں اپنا مشہور زمانہ شیر کی شکل والا لوگو بنایا جو گاڑیوں سے پہلے ان کے آروں پر بنایا جاتا تھا اور ان کے دندانوں کی مضبوطی ظاہر کرتا تھا۔ 1889 میں پیجو کی طرف سے پہلی گاڑی اسی لوگو کے ساتھ مارکیٹ میں آئی۔ 

پاکستان میں پیجو ییلو کیب سکیم کی گاڑیوں میں ڈائیوو کے ساتھ امپورٹ کی گئی لیکن زیادہ مارکیٹ بنانے میں کامیاب نہیں ہو سکی۔ 

پیجو 2008 

کیا لکی موٹرز کے نمائندے انصرام کے مطابق یہ گاڑی پاکستان میں دو سے تین ماہ کے اندر لانچ کر دی جائے گی۔

کیا کمپنی کی سٹونک بھی اسی گاڑی کے آس پاس لانچ ہو گی اور مزے کی بات یہ ہے کہ دونوں ایک ہی کیٹیگری میں مقابلے کی گاڑیاں ہیں۔ 
اسے پیجو 3008 کا چھوٹا ورژن بھی کہا جا سکتا ہے جو ایک الٹرا پرو میکس قسم کی ایس یو وی ہے۔ نسان جیوک اگر آپ نے دیکھی ہو تو پیجو 2008 گاڑی عین اسی کیٹیگری میں فٹ کی جا سکتی ہے۔ 

فرانسیسی کار کمپنی پیجو کا یہ سمارٹ ایس یو ماڈل بہت ہی فیوچرسٹک ڈیزائن میں لانچ کیا جائے گا۔ اگر آپ کو 1996 کی ہونڈا سوک یاد ہو تو یہ ماڈل مستقبل میں اسی طرح کی خصوصیات کے ساتھ لوگوں کے ذہنوں میں نقش رہے گا۔


ہیڈ لائٹس میں تین سیدھی لائنوں کے ساتھ ایک لمبی لائٹ نیچے اس طرح سے دکھائی دیتی ہے جیسے کسی جانور کا منہ کھلا ہوا ہے۔ انگریزی میں اسے Beast Look کہا جا سکتا ہے۔ 

انٹیرئیر

انٹیرئیر کی بات کریں تو ایک سپورٹس گاڑی جیسے سٹئیرنگ کے ساتھ ٹو ٹون ڈیش بورڈ اور ٹمپریچر کنٹرول کے لیے پرانی گاڑیوں جیسے بٹن موجود ہیں جو گاڑی کو ایک ونٹیج تاثر دیتے ہیں۔ گاڑی کے باہر لگی ہوئی فرنٹ گرل اور اندرونی ڈیزائن کا ٹرم ماڈل کے ساتھ بدلتا ہے۔ مختلف ماڈلز آپ کو الگ الگ خصوصیات آفر کریں گے۔  پیجو 2008  میں سات انچ فلوٹنگ انفوٹینمنٹ ٹچ سکرین سمیت  سنگل زون آٹو کلائمیٹ کنٹرول دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ گاڑی میں سمارٹ کی انٹری، پش سٹارٹ اور کروز کنٹرول جیسے فیچرز بھی دیے گئے ہیں۔

پچھلی سیٹ پر جانے کے لیے گاڑی میں داخل ہوتے وقت تھوڑی تنگی کا احساس ہو سکتا ہے لیکن وہ قربانی گاڑی کے ایروڈانامک ڈیزائن کے لیے دینی پڑے گی۔ پیچھے بیٹھے آدمی کے لیے ہیڈ سپیس نسان جیوک سے زیادہ ہے لیکن اگر بیٹھنے والے کا قد نارمل سے زیادہ ہے تو اسے تھوڑا آگے ہو کے ٹیک لگانا پڑے گی اور یہ سیٹ دو جوان آدمیوں یا تین بچوں کے لیے کافی ہے۔ پچھلی سیٹ کے شیشے نارمل سائز سے تھوڑے کم ہیں، خاص طور پہ بچے اگر بیٹھیں تو انہیں سیر کرنے میں  تکلیف کا سامنا ہو سکتا ہے۔ 


434 لٹر سائز کے ساتھ اس کی ڈگی میں ایک نارمل فیملی کے سفر کا سارا سامان رکھا جا سکتا ہے۔ اگر پچھلی سیٹیں فولڈ کر دی جائیں تو پھر گاڑی میں چھوٹی کرسیاں یا میز تک رکھ کے لائی جا سکتی ہیں۔
یورپ میں اس وقت یہ گاڑی 1200 سی سی پیٹرول اور 1500 سی سی پٹرول/ڈیزل دونوں انجن میں دستیاب ہے۔ مینوئل اور آٹو میٹک ٹرانسمیشن دونوں آپشن  1200 سی سی اور 1500 سی سی انجن والی گاڑیوں میں موجود ہیں، پارکنگ بریک لیور کی بجائے بٹن والی ہے۔ پاکستان میں اس گاڑی کا 1200 سی سی ٹربو ورژن لانچ کیے جانے کی امید ہے۔ 

سپیڈو میٹر کی جگہ گاڑی میں ڈیجیٹل ڈسپلے ہے جو چینی گاڑیوں سے ہٹ کے تھوڑا سپورٹی قسم کا تاثر دیتا ہے۔
فیول کنزمپشن میں گاڑی کی ایوریج پاکستان میں موجود دوسری ایس یو ویز سے بہتر ہو گی۔ یہ گاڑی 16 سے 19 کلومیٹر فی لٹر کی ایوریج یورپ میں دے رہی ہے۔ 

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

پیمائش
پیجو 2008 کی لمبائی 4158 ملی میٹر، چوڑائی 1740 ملی میٹر، اونچائی 1557 ملی میٹر اور ویل بیس 2538 ملی میٹر ہے۔ گاڑی کی گراؤنڈ کلئیرنس 170 ملی میٹر ہے۔

ایکسٹیرئیر
اس گاڑی میں ایل ای ڈی ہیڈ لائٹس اور ایل ای ڈی DRLs دی جائیں گی۔ پیجو 2008 میں 17 انچ کا الائے ویل ہو گا۔ کمپنی گاڑی میں سن روف بھی متعارف کروانے جا رہی ہے۔

سیفٹی
 پیجو 2008 میں 6 ائیربیگز دئیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ گاڑی میں ABS، ہل سٹارٹ اسسٹ، رئیر ویو کیمرہ، فرنٹ اور رئیر پاکنگ سینسرز جیسے سیفٹی فیچرز پائے جاتے ہیں۔ تاہم یہاں آپ کو وہیکل سٹیبلٹی مینیجمنٹ (VSM) فیچر نہیں دیا گیا۔

قیمت: 
یورپی قیمتوں کو دیکھیں تو اس گاڑی کی قیمت 55 سے ساٹھ لاکھ کے درمیان امید کی جا سکتی ہے۔

زیادہ پڑھی جانے والی ٹیکنالوجی