فٹ بال: نئی آف سائیڈ ٹیکنالوجی کیسے کام کرتی ہے؟

یہ ٹیکنالوجی اپنے طور پر آف سائیڈ کے فیصلے نہیں کرتی اور حتمی فیصلہ ہمیشہ ریفری کے پاس رہے گا۔

اگر ایک فٹ بال کھلاڑی پاس ملتے وقت گیند کی نسبت مخالف سائیڈ والی گول لائن کے زیادہ قریب ہو تو وہ آف لائن ہو جاتا ہے اور وہ اگر کھیل میں حصہ لے گا تو فاؤل کرے گا۔

کھیل کے دوران واضح آف سائیڈ کو برہنہ آنکھ سے دیکھا جا سکتا ہے لیکن شدید متنازع معاملات میں، مثال کے طور پر جہاں ایک ٹانگ یا سر لائن سے آگے ہو، ریفری اب ایک نیم خودکار آلہ استعمال کرسکتے ہیں۔

سٹیڈیم کی چھت پر نصب 12 کیمرے کھلاڑیوں کے جسم پر 29 اہم سنسرز پوائنٹس کے 50 فریم فی سیکنڈ ریکارڈ کرتے ہیں۔

گیند میں لگے سینسر اس درست لمحے کی نشاندہی کرتے ہیں جب اسے کھیلا جاتا ہے اور بالکل درست مقام جہاں آف سائیڈ درست ہوں۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

مصنوعی ذہانت اپنے اعداد و شمار کو یکجا کرتی ہے اور اگر آف سائیڈ کا معاملہ ہے تو ریفریز کو الرٹ بھیجتی ہے۔

یہ آف سائیڈ لائن کا پتہ لگاتے ہوئے ویڈیو ایڈیٹرز کی مدد کرنے اور انہیں سٹیڈیم میں سکرینوں پر نشر کرنے کے لیے دوبارہ ایک تھری ڈی اینمیشن بناتی ہے۔

یہ ٹیکنالوجی 2021 میں عرب کپ میں پہلی بار ٹیسٹ کی گئی اور اس سال قطر میں ورلڈ کپ کے لیے استعمال ہو گی۔

یہ ٹیکنالوجی اپنے طور پر آف سائیڈ کے فیصلے نہیں کرتی اور آخری فیصلہ ہمیشہ ریفری کے پاس رہے گا۔

زیادہ پڑھی جانے والی فٹ بال