اقوام متحدہ میں اسلاموفوبیا کے خلاف عالمی دن منانے کی قرارداد منظور

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے منگل کی رات ایک ٹویٹ میں کہا کہ ’ میں آج امتِ مسلمہ کو مبارکباد پیش کرتا ہوں کہ اسلاموفوبیا کی بڑھتی ہوئی لہر کے خلاف ہماری آواز سنی گئی۔‘

عمران خان دو مارچ کوکامیاب پاکستان پروگرام کے سلسلے  میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے (عمران خان/ فیس بک)

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے اسلامی تعاون تنظیم کی ایما پر اسلاموفوبیا کے خلاف عالمی دن منانے کی پاکستان کی پیش کردہ قرارداد منظور کر لی ہے۔

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے منگل کی رات ایک ٹویٹ میں کہا کہ ’ میں آج امتِ مسلمہ کو مبارکباد پیش کرتا ہوں کہ اسلاموفوبیا کی بڑھتی ہوئی لہر کے خلاف ہماری آواز سنی گئی۔‘

انہوں نے اپنی سلسلہ وار ٹویٹس میں لکھا کہ’15 مارچ کو اسلاموفوبیا کے تدارک کے عالمی دن کے طور پر مقرر کرتے ہوئے اقوام متحدہ نے او آئی سی کی ایما پر پاکستان کی پیش کردہ تاریخی قرارداد منظور کی ہے۔‘

اس سے قبل اسلام آباد میں پی ٹی آئی اوورسیز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے بتایا تھا کہ ’آج اقوام متحدہ میں بحث ہو رہی ہے اور اسلاموفوبیا کے خلاف قرار داد منظور ہو رہی ہے، یہ ہماری وجہ سے ہے۔‘

اپنی ٹویٹ میں عمران خان نے مزید کہا کہ ’اقوام متحدہ نے بالآخر آج دنیا کو درپیش اسلاموفوبیا، مذہبی آثار و رسومات کی تعظیم، منظم نفرت انگیزی کے انسداد اور مسلمانوں کے خلاف تفریق جیسے بڑے چیلنجز کا اعتراف کیا۔‘

انہوں نے لکھا کہ ’اس تاریخی قرار داد کا نفاذ یقینی بنانا اب اگلا امتحان ہے۔‘

اس سے قبل اقوام متحدہ میں پاکستان کے نمائندے منیر اکرم نے جنرل اسمبلی میں اسلامی تعاون تنظیم کی جانب سے قرارداد پیش کی۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

ان کا کہنا تھا کہ ’میں آج اسلام تعاون تنظیم کی جانب سے اسلاموفوبیا کے خلاف عالمی دن مقرر کرنے کی قرارداد پیش کر رہا ہوں۔‘

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں قرارداد پیش کرتے ہوئے پاکستان کے مستقل نمائندے منیر اکرم کا کہنا تھا کہ ’اسلاموفوبیا ایک حقیقت ہے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’اسلاموفوبیا کے مسئلے کو سب سے پہلے میرے وزیراعظم عمران خان نے جنرل اسمبلی سے 27 ستمبر 2019 کو اپنے پہلے خطاب میں اٹھایا تھا۔‘

خیال رہے کہ پاکستان کی سینیٹ اور قومی اسمبلی نے بھی اکتوبر 2020 میں فرانس میں توہین آمیز خاکوں کی عوامی تشہیر اور اسلاموفوبیا کی مذمت کرتے ہوئے ایک متفقہ قرارداد منظور کی گئی تھی جس میں او آئی سی سے توہین آمیز خاکوں کی تشہیر اور اسلاموفوبیا سے متعلق لائحہ عمل تیار کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے  15 اکتوبر اسلاموفوبیا کے خلاف دن قرار دیے جانے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

جبکہ اسی دوران وزیر اعظم عمران خان نے فیس بک کے سی ای او مارک زکربرگ کو ایک خط میں ویب سائٹ پر اسلام سے نفرت پر مبنی مواد پر پابندی عائد کرنے کا کہا تھا۔

زیادہ پڑھی جانے والی پاکستان