آئفل ٹاور سے پھینکا گیا سکہ کسی کے سر پر گرے تو؟

ہم نے یہاں چند ایسے دلچسپ سوالات کا جائزہ لیا ہے جن کے جواب صرف سائنس ہی دے سکتی ہے۔

(تصویر: اے ایف پی)

آئفل ٹاور سے پھینکے جانے والا سکہ کتنی تیزی سے نیچے پہنچے گا؟ اگر وہ سکہ کسی کو جا لگے تو اسے کتنا زخمی کر سکتا ہے؟ 

گرنے والی کسی بھی شے کی رفتار لامحدود حد تک نہیں بڑھتی، بلکہ وہ ایک خاص رفتار تک پہنچ کر اپنی رفتار برقرار کر لیتی ہے۔ اسے ’ٹرمینل ولوسٹی‘ کہتے ہیں۔ 

آئفل ٹاور سے گرائے جانے والے سکے کی ٹرمینل ولوسٹی تقریباً 45 میٹر فی سیکنڈ ہوتی ہے۔ اس رفتار سے گرنے والا سکے کسی کو جا لگے تو اچھا خاصا نقصان کر سکتا ہے۔ 

جب ایک پرندہ پنجرے میں اڑنا شروع کر دے، تو پرندے اور پنجرے کا کل وزن کیا ہو گا؟

پنجرے کے نیچے سے وزن کے کانٹے کے ذریعے تولنے پر کل وزن کم ہو جائے گا۔ جب پرندہ بیٹھا ہو تو کل وزن پنجرے اور پرندے کے وزن کا مجموعہ ہوتا ہے۔

جیسے ہی پرندہ اڑنا شروع کر دیتا ہے تو اس کے وزن کا اس کانٹے پر کوئی اثر نہیں ہوتا جس پر پنجرہ رکھا گیا ہو۔

تاہم اگر پرندہ ایسے ڈبے میں بند ہے جہاں ہوا آنے جانے کا راستہ نہیں (ایسا گھر پر کرنے کی کوشش نہ کریں)، تو وزن برقرار رہے گا۔ ایسا اس لیے کیوںکہ پرندہ دورانِ پرواز پر پھڑپھڑاتا ہے اور ہر بار ایسا کرنے سے ہوا کا کچھ حصہ نیچے کی جانب اسی وزن کے ساتھ جاتا ہے جو پرندے کا ہوتا ہے۔

آسمانی بجلی میں آپ ڈبل روٹی کے کتنے ٹکڑوں کو ٹوسٹ کر سکتے ہیں؟

آسمانی بجلی کی ایک کڑک میں ایک ارب واٹ طاقت ہوتی ہے جو کہ آٹھ سو ٹوسٹرز کے برابر ہے۔ اس سے ڈبل روٹی کے ڈیڑھ ارب سے زیادہ ٹکڑوں کو ٹوسٹ کیا جا سکتا ہے۔

لازمی بات ہے کہ ڈبل روٹی کے ان تمام ٹکڑوں کو جمع کر کے پانچ ملی سکینڈز میں الٹنا تھورا ٹِرکی ہو سکتا ہے۔

کسی چیز کو سمندر کی گہری ترین کھائی کی تہہ تک گرنے میں کتنا وقت لگے گا؟

دنیا کا گہرا ترین مقام ماریانا ٹرینچ ہے جس کی گہرائی 35,839 فٹ یا 10,860 میٹر ہے۔ اگر اس کی سطح سے آپ کوئی چیز پھینکیں تو اسے تہہ تک گرنے میں تقریبا ایک گھنٹہ لگے گا۔

فلم ’گولڈ فنگر‘ میں ایک عورت کو غیر مسام دار پینٹ میں رنگا گیا تھا جس سے وہ مر گئی۔ کیا حقیقت میں بھی ایسا ہو سکتا ہے؟

جی ہاں، کئی وجوہات کی بنا پر ایسا ممکن ہے۔

 سب سے پہلے، ہمارے جسم  کو درکار مناسب درجہ حرارت کے لیے جلد بہت اہم ہے۔ ہمارے جسم سے مسلسل پسینہ نکلتا ہے اور بھاپ بن کر جسم سے حرارت ختم کرتا ہے۔

ہوا لگنے سے جسم میں جلد کے قریب بہنے والے خون سے بھی حرارت نکل جاتی ہے اور یہ ٹھنڈا ہوتا ہے۔ ان دونوں میکانزم کے بغیر جسم زیادہ گرم ہو جاتا ہے اور انسان مر سکتا ہے۔

دوسری بات یہ ہے کہ جلد کے اوپر لگائے جانے والے مادے اندر جذب ہو سکتے ہیں۔

جیسے کہ غیر مسام دار پینٹ میں کوئی زہریلا مادہ۔ ہو سکتا ہے گردے ان کو ختم کر دیں یا ان کی وجہ سے آپ مر جائیں۔

تیسری بات یہ ہے کہ ایک غیر مسام دار پینٹ کا مطلب یہ ہو گا کہ جلد کی واٹر پروف سطح کی پرت پانی سے بھر جائے گی (جیسے کچھ دیر کے لیے نمی جذب نہ کرنے والا پلاسٹر پہننا) اور یہ انفیکشن کے لیے موزوں بن جائے گی۔ یہاں تک کہ یہ پھٹنا شروع ہو سکتی ہے۔

اگر گولی بیرل سے 500 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے نکلتی ہے تو 1000 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر اڑنے والے طیارے میں گولی کی رفتار کیا ہے؟

اگر گولی  جہاز کے اگلے حصے کی طرف چلائی جائے تو زمین پر کھڑے کسی شخص کے لیے رفتار 1500 میل فی گھنٹہ ہو گی اور اگر پچھلے حصے کی طرف فائر کیا جائے تو گولی کی رفتار 500 میل فی گھنٹہ ہو گی۔

گولی کو چاہے اسے کسی بھی سمت فائر کیا گیا ہو، جہاز میں موجود ہر شخص کو لگے گا کہ گولی 500 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے  اڑ رہی تھی۔

© The Independent

زیادہ پڑھی جانے والی سائنس