کرکٹ ورلڈ کپ: انڈر 19 لیول پر بھی ’منکڈ‘

آئی سی سی انڈر 19 ورلڈ کپ میں پاکستان اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان میچ ختم ہونے سے پہلے ہی سوشل میڈیا پر بحث شروع ہو گئی ہے۔

جیسے ہی یہ واقع پیش آیا تو سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے فوراً ہی رن آؤٹ کی تصاویر شیئر ہونے لگیں (سوشل میڈیا/ ٹوئٹر)

آئی سی سی انڈر 19 ورلڈ کپ میں پاکستان اور افغانستان کی ٹیموں کے درمیان میچ ختم ہونے سے پہلے ہی سوشل میڈیا پر بحث شروع ہو گئی ہے۔

یہ بحث اس وقت شروع ہوئی جب پاکستانی اننگز کے 27ویں اوور میں افغان بولر نے پاکستانی سیٹ بلے باز محمد ہریرہ کو رن آؤٹ کر دیا۔

یہ اتنی بھی سادہ بات نہیں تھی کہ بس رن آؤٹ ہو گیا تو اس پر بحث کیسی، بلکہ کرکٹ میں استعمال ہونے والی ایک اصطلاح جسے ’منکڈ‘ کہا جاتا ہے کہ ذریعے رن آؤٹ کیا گیا ہے جو ہمیشہ سے ہی متنازع سمجھی جاتی رہی ہے۔

ہوا کچھ یوں کہ افغانستان کی انڈر 19 ٹیم کے نوجوان بولر نور محمد بولنگ کروانے کے لیے بھاگے تو انہوں اس دوران گیند پھینکنے سے قبل واپس مڑ کر نان سٹرائک پر کھڑے محمد ہریرہ جو اس وقت 64 رنز پر کھیل رہے تھے کو رن آؤٹ کر دیا۔

منکڈ رن آؤٹ اُس رن آؤٹ کو کہتے ہیں جس میں بولر نان سٹرائیکر اینڈ پر کھڑے کھلاڑی کو گیند کرانے سے قبل آؤٹ کر دیتا ہے۔

یہ نام اسے 70 سال قبل اُس وقت دیا گیا تھا جب انڈین آل راؤنڈر وینو منکڈ نے 1947 میں آسٹریلوی بلے باز بل براؤن کو بھارت کے دورہ آسٹریلیا کے دوران دو بار اس طرح آؤٹ کیا تھا۔

اس طرح آؤٹ کرنا اگرچہ قانونی ہے لیکن کئی لوگوں کے نزدیک یہ کھیل کی روح کے منافی ہے اور بلے باز کو پہلے تنبیہہ ضرور کرنی چاہیے۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

پاکستان اور افغانستان کے درمیان میچ میں جیسے ہی یہ واقع پیش آیا تو سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے فوراً ہی رن آؤٹ کی تصاویر شیئر ہونے لگیں اور زیادہ تر کے خیال میں بولر کی جانب سے یہ صحیح عمل نہیں تھا۔

بہت سے صارفین کا کہنا تھا کہ ایسا کسی بھی قسم کی کرکٹ میں اچھا نہیں لگتا اور خاص طور پر تب جب کے دو نوجوان ٹیموں کے درمیان میچ کھیلا جا رہا ہو۔

کرکٹ کے حوالے سے سوشل میڈیا پر اعداد و شمار اور معلومات شیئر کرنے والے ساج صادق نے لکھا: ’پاکستان اور افغانستان کے درمیان میچ کے دوران ’منکڈ‘ آؤٹ وہ بھی انڈر 19 لیول پر۔‘

 

پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر محمد وسیم نے بھی کچھ ایسا ہی لکھا جس کا کہنا تھا کہ ’کسی بھی قسم کی کرکٹ میں یہ کوئی اچھا منظر نہیں ہوتا۔ خاص طور پر جونیئر لیول پر۔‘

تاہم کرکٹ کے تجزیہ کار مظہر ارشد کا کہنا تھا کہ جب وکٹ کیپر سٹمپ آؤٹ کرنے سے پہلے بیٹسمین کو نہیں بتاتے یو بولر رن آؤٹ کرنے سے پہلے کیوں بتائے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’منکڈ‘ کھیل کی قوائد کے تحت درست ہے۔ 

 

سابق کرکٹر عمر گل کا کہنا تھا قوائد کے مطابق یہ ایک وکٹ تھی مگر ہمیں اس کی حوصلہ افزائی نہیں کرنی چاہیے کیونکہ یہ گیم کی سپرٹ کے خلاف ہے۔

 

زیادہ پڑھی جانے والی سوشل