رمضان میں بھی کوئی کرکٹ نہیں

پاکستان کرکٹ بورڈ نے اعلان کیا ہے کہ کرونا وائرس جیسی عالمی وبا کے پیش نظر ماہ رمضان میں کسی بھی قسم کی کرکٹ سرگرمی کے لیے این او سی جاری نہیں کیا جائے گا۔

پی سی بی نے منتظمین اور کرکٹرز سے درخواست کی کہ وہ تمام تر احتیاطی تدابیر پر مکمل عمل کرتے ہوئے گھروں میں رہیں اور سماجی فاصلہ اختیار کرنے کے ساتھ ساتھ کسی بھی اجتماعی سرگرمی سے دور رہیں۔ (فائل تصویر: اے ایف پی)

 

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے اعلان کیا ہے کہ کرونا (کورونا) وائرس جیسی عالمی وبا کے پیش نظر ماہ رمضان میں کسی بھی قسم کی کرکٹ سرگرمی کے لیے این او سی جاری نہیں کیا جائے گا۔ بورڈ کا مزید کہنا تھا کہ وہ اس سال کے اختتام تک کوشش کرے گا کہ تمام کھلاڑیوں کو ان کی تنخواہ باقاعدگی سے دیتا رہے۔

لاہور سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کرکٹ بورڈ کا کہنا تھا کہ چند منتظمین نے رمضان میں کرکٹ کے لیے این او سی کے حصول کی غرض سے وضاحت طلب کرنے کے لیے رابطہ کیا۔ ’اس وقت مناسب یہی ہے کہ ہم اس سلسلے میں اپنی واضح اور جامع پالیسی پر عمل کریں، جس کے مطابق پی سی بی نے فی الوقت تمام تر کرکٹ سرگرمیوں کو معطل کر رکھا ہے، لہٰذا جب تک حالات معمول پر نہیں آتے پی سی بی رمضان کرکٹ کے لیے کوئی این او سی جاری نہیں کرے گا۔‘

بورڈ کا کہنا تھا کہ یہ ایک مشکل صورت حال ہے، جہاں دنیا بھر میں معاشی اور کھیلوں کی سرگرمیاں معطل ہیں اور اس وقت تمام تر توجہ صرف لوگوں کی صحت اور حفاظت پر مرکوز ہے۔

پی سی بی نے منتظمین اور کرکٹرز سے درخواست کی کہ وہ تمام تر احتیاطی تدابیر پر مکمل عمل کرتے ہوئے گھروں میں رہیں اور سماجی فاصلہ اختیار کرنے کے ساتھ ساتھ کسی بھی اجتماعی سرگرمی سے دور رہیں۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

پی سی بی کا کہنا ہے کہ وہ اپنے ملازمین اور کھلاڑیوں کی حفاظت اور فلاح و بہبود کے حوالے سے بہت سنجیدہ ہے۔

ملازمین کے علاوہ تقریباََ 220 پیشہ ور کرکٹرز پی سی بی کے پے رول پر ہیں۔ پی سی بی نے کہا کہ وہ اس عمل کو یقینی بنائے گا کہ تمام کھلاڑیوں کو کم از کم مالی سال برائے 20-2019 کےاختتام تک ان کی تنخواہیں ادا کی جائیں۔ علاوہ ازیں اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ ماہوار تنخواہ میں کسی قسم کی تاخیر نہ ہو۔

بیان کے مطابق: 'اس دوران پی سی بی ملک میں بدلتی ہوئی صورت حال پر گہری نظر رکھے ہوئے اور جب مناسب ہوگا تو اپنی پالیسی میں ترمیم کرے گا۔'

پاکستان میں ہر سال ماہ رمضان کے آتے ہیں رات کو کرکٹ کے میدان سج جاتے ہیں۔ کرکٹ کے شائقین کے لیے یہ مزید حوصلہ شکن خبر ثابت ہوگی۔

زیادہ پڑھی جانے والی کرکٹ