اسرائیلی طیارے تباہ کرنے والے پاکستان فضائیہ کے پائلٹ کا انتقال

سیف الاعظم دنیا کے واحد لڑاکا پائلٹ ہیں جنہوں نے چار مختلف فضائی افواج پاکستان، اردن، عراق اور بنگلہ دیش کے لیے خدمات انجام دیں۔

تین اسرائیلی طیارے تباہ کرنے والے پاکستان ایئر فورس کے سابق پائلٹ سیف الاعظم اتوار کو بنگلہ دیش کے درالحکومت ڈھاکہ میں انتقال کر گئے۔

'ڈھاکہ ٹریبون' کی ایک رپورٹ کے مطابق سیف الاعظم، جو سول ایوی ایشن اتھارٹی بنگلہ دیش کے دو بار سربراہ بھی رہ چکے ہیں، علالت کے باعث ڈھاکہ کے کمبائنڈ ملٹری ہسپٹل میں زیرعلاج تھے۔

80 سالہ لیجنڈ پائلٹ نے اتوار اور پیر کی درمیانی شب ہسپتال میں آخری سانس لی۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی بنگلہ دیش نے ایک بیان میں ان کی موت کا اعلان کرتے ہوئے گہرے صدمے اور ان کے خاندان کے ساتھ  ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کیا۔

سیف الاعظم 1941 میں بنگلہ دیش کے شہر پبنا میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے 1960 سے 1971 تک پاکستان فضائیہ (پی اے ایف) اور بنگلہ دیش کے قیام کے بعد بنگلہ دیش ایئر فورس (بی اے ایف) میں 1979 تک خدمات انجام دیں۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

سیف الاعظم دنیا کے واحد لڑاکا پائلٹ ہیں جنہوں نے چار مختلف فضائی افواج پاکستان، اردن، عراق اور بنگلہ دیش کے لیے خدمات انجام دیں۔

وہ ایسے منفرد پائلٹ بھی ہیں جنہوں نے 1965 کی پاکستان۔ بھارت جنگ اور 1967 میں تیسری عرب۔ اسرائیل جنگ کے دوران دو مختلف فضائی افواج یعنیٰ بھارت اور اسرائیل کے جنگی طیاروں کو تباہ کیا تھا۔

اپریل 1961 میں پاکستانی فضائیہ کے پائلٹ کی حیثیت سے امریکہ میں تربیت حاصل کرنے کے بعد امریکی فضائیہ (یو ایس اے ایف) نے سیف الاعظم کو 'ٹاپ گن' ایوارڈ سے نوازا تھا۔

سیف الاعظم کے علاوہ آج تک دنیا میں کسی اور پائلٹ کے پاس سب سے زیادہ اسرائیلی طیارے مار گرانے کا اعزاز نہیں۔ انہیں2001 میں یو ایس اے ایف نے دنیا کے 22 'لیونگ ایگلز' میں شامل کیا تھا۔  

جنگ میں غیر معمولی مہارت اور جرات کے سبب انہوں نے اردن، عراق اور پاکستان سے مختلف ایوارڈز بھی حاصل کیے۔ سیف الاعظم 1991 سے 1996 تک بنگلہ دیش کی قانون ساز اسمبلی کے رکن بھی رہے۔

زیادہ پڑھی جانے والی دنیا