’پری زاد ٹچڈ مائے ہارٹ‘

سوشل میڈیا پر پری زاد کی اپنی بہن کے ساتھ ملاقات کا کلپ سب سے زیادہ شیئر کیا جا رہا ہے جس میں اس کی بہن اس کی دولت اور شان و شوکت کے بارے میں دریافت کیے بغیر اسے گلے لگا لیتی ہے۔

پاکستانی ڈرامے پری زاد  کے مرکزی کردار پری زاد(تصویر: سکرین گریب)

پاکستانی ڈراما سیریل پری زاد سوشل میڈیا کی منگل کو نشر ہونے والی قسط کو 24 گھنٹوں کے دوران یوٹیوب پر 60 لاکھ سے زائد لوگ دیکھ چکے ہیں اور پری زاد کا ہیش ٹیگ ٹرینڈ بھی کر رہا ہے۔

ہم ٹی وی کے ڈرامے پری زاد کی تازہ قسط میں دکھایا گیا ہے کہ پری زاد کے جیل سے رہا ہو جانے اور اپنے سابق مالک بہروز کریم کا جانشین بن جانے کے بعد اس سے سارے شہر کے امرا ملاقات کرنا چاہتے ہیں اور اس سلسلے میں پری زاد جس نے اب اپنا نام ’پی زیڈ میر‘ رکھ لیا ہے کے اعزاز میں ایک پر تکلف دعوت کا اہتمام کیا جاتا ہے جس میں شہر بھر کے امرا شریک ہوتے ہیں۔

اسی دعوت میں پری زاد کی ملاقات چند خواتین سے ہوتی ہے جو اس کی غربت کے دور باوجود اس کے قریب ہونے کے پری زاد سے غربت کی وجہ دور ہو جاتی ہیں۔

سوشل میڈیا پر پری زاد کی اپنی بہن کے ساتھ ملاقات کا کلپ سب سے زیادہ شیئر کیا جا رہا ہے جس میں اس کی بہن اس کی دولت اور شان و شوکت کے بارے میں دریافت کیے بغیر اسے گلے لگا لیتی ہے۔

اس سین کے بارے میں سب سے زیادہ کمنٹس کیے جا رہے ہیں۔ اس کے علاوہ پری زاد کے بھائیوں اور دیگر قریبی رشتہ داروں کے کلپس شیئر کیے جا رہے ہیں جو غربت کے دور میں اس سے جان چھڑانا چاہتے تھے اور امیر ہونے کے بعد بچھے چلے جا رہے ہیں۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

اس قسط کے نشر ہونے کے بعد سوشل میڈیا پر سب سے زیادہ تاثر اس بات کا لیا گیا ہے کہ اگر پری زاد امیر ہوگیا ہے تو اسے اب گورا بھی ہو جانا چاہیے یا پھر اگر کوئی امیر ہے تو ضرور وہ گورا بھی ہوگا۔

اس کے علاوہ زیادہ تر سوشل میڈیا صارف اس پر بات کر ہے ہیں کہ اگر کوئی امیر ہو گیا ہے تو اسے اپنی ظاہری شکل و صورت کو بہتر بنانا چاہیے اور اس کی شخصیت کی خرابیاں بھی اس کی امارت کے پیچھے چھپ جائیں گی۔

البتہ چند سوشل میڈیا صارفین نے ڈرامے کے ڈائیلاگ بھی شیئر کیے ہیں جن انسان کی عزت نفس کی بات کی گئی ہے۔

ایک سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ میں تو جا رہا ہوں کراچی بہروز گروپ آف انڈسٹریز میں کام کرنے۔

ایک صارف نے پری زاد کے نام بدلنے پر لکھا ہے کہ حالات کے ساتھ نام بدلنا پڑتا ہے۔

اس کے علاوہ ڈرامے کے دوران پیش کی گئی نظمیں بھی شیئر کی جا رہی ہیں اور بہت سے صارفین نے ٹچڈ مائے ہارٹ لکھا ہے۔

زیادہ پڑھی جانے والی ٹرینڈنگ