ناراض بھائی کو منانے کے لیے بہن کا 434 میٹر طویل خط

کرشنا پریا جب 24 مئی کو برادرز ڈے پر اپنے بھائی کو مبارکباد دینا بھول گئیں تو انہوں نے اپنے ناراض بھائی کو طویل خط لکھنے کا فیصلہ کیا۔

کرشنا پریا  اور کرشنا پرشاد (سکرین گریب: ٹائمز ناؤ، یوٹیوب)

برادرز ڈے کے موقعے پر اپنے بھائی کو مبارک باد نہ بھیج سکنے کا ازالہ کرنے کے لیے خاتون نے بلنگ رولز پر 434 میٹر طویل خط لکھا دیا جس کا وزن پانچ کلوگرام سے زیادہ تھا۔

ان جذبات کا اظہار بھارتی ریاست کیرالہ کی رہائشی کرشنا پریا کی طرف سے کیا گیا جن کی شناخت مقامی ذرائع ابلاغ میں صرف اسی ایک نام سے ہوئی ہے۔

وہ جب 24 مئی کو منائے جانے والے برادرز ڈے کے موقع پر اپنے بھائی کو مبارکباد دینا بھول گئی تو انہوں نے طویل خط لکھنے کا فیصلہ کیا۔

ان کے چھوٹے بھائی 21 سالہ کرشنا پرساد نے ان کے ساتھ تمام رابطے ختم کر دیئے اور انہیں واٹس ایپ پر بلاک کر دیا تھا۔

 پریس ٹرسٹ آف انڈیا نیوز وائر کی رپورٹ کے مطابق بھارت کی جنوبی کیرالہ ریاست میں انجینئر کے طور پر کام کرنے والی بہن نے اپنے بھائی سے اپنی محبت کے متعلق لکھنے کا فیصلہ کیا۔

خط 434 میٹر طویل ہو گیا۔ جب دو دن بعد بھائی کو پارسل ملا تو اس نے شروع میں سوچا کہ یہ سالگرہ کا تحفہ ہے لیکن وہ یہ رزمیہ خط دیکھ کر حیران رہ گیا جس کا وزن تقریبا پانچ اعشاریہ27 کلوگرام تھا۔

انہوں نے مقامی میڈیا کو بتایا: ’میں اسے برادرز ڈے پر مبارکباد دینا بھول گئی۔ شام تک اس نے میری کالز اٹھانا بند کر دیں اور مجھے واٹس ایپ پر بلاک بھی کردیا۔ چنانچہ میں نے ایک خط لکھنے کا فیصلہ کیا۔ میں نے اے 4 سائز شیٹس پر لکھنا شروع کیا لیکن جلد ہی احساس ہوا کہ یہ ناکافی ہوگا کیونکہ مجھے  بہت کچھ بتانا تھا۔‘

’تو میں نے بڑی شیٹس خریدنے کا فیصلہ کیا۔ لیکن جب میں مارکیٹ گئی تو انہوں نے کہا کہ ان کے پاس صرف بلنگ رولز ہیں جو لمبے ہیں۔ تو میں 14 رول لے آئی۔ مجھے پورا خط لکھنے میں تقریبا12 گھنٹے لگے جس کی لمبائی 434 میٹر اور وزن میں پانچ کلوگرام تھا۔ ‘

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

کرشنا پریا نے خط میں اپنے سے سات سال چھوٹے بھائی کے لیے محبت کا اظہار کیا۔

رپورٹس میں ان کے حوالے سے بتایا گیا:’ ہمارے درمیان سات سال کا فرق ہے۔ لہذا وہ میری عزت کرتا ہے اور ماں یا استاد کی طرح  مجھ سے تھوڑا سا ڈرتا ہے۔ ہم جذباتی طور پر ایک دوسرے سے بہت وابستہ ہیں اور ہمارے تعلقات بہت دوستانہ ہیں۔‘

’بچپن میں ہم جڑواں بچوں کی طرح تھے کیونکہ ہم خاندان میں خاص مواقع پر ایک ہی رنگ کے کپڑے پہنتے تھے۔‘

کرشنا پرساد نے کہا:’ مجھے اس وقت تکلیف اور مایوسی ہوئی جب انہوں نے اس سال برادرز ڈے کے موقع پر مجھے مبارکباد نہیں دی۔ میں نے شام کو انہیں فون کیا، لیکن وہ کام میں مصروف تھیں اس لیے، میں نے زیادہ دیر تک بات نہیں کی اور کال بند کردی۔ اس کے بعد، میں نے انہیں واٹس ایپ پر بلاک کر دیا۔ جو کچھ ہوا وہ انہیں برا لگا ہوگا اور اسی وجہ سے انہوں نے خط لکھا۔ جب یہ خط مجھے ملا تو مجھے بہت خوشی ہوئی۔

کرشنا پریا کا ماننا ہے کہ یہ اب تک کا سب سے طویل خط ہوسکتا ہے اور اس لیے انہوں نے گنیز ورلڈ ریکارڈز کو درخواست دی ہے۔

زیادہ پڑھی جانے والی دنیا