شام: ’اسرائیلی حملے میں 19 جنگجو ہلاک، اکثریت پاکستانی‘

سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے​​​​​​​ مطابق مشرقی شام میں بظاہر اسرائیلی فضائیہ کے حملے میں 19 ایران حمایت یافتہ جنگجو ہلاک ہو گئے ہیں۔

شامی جنگ میں اب تک تین لاکھ 80 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ لاکھوں افراد بے گھر بھی ہو چکے ہیں(اے ایف پی)

سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق مشرقی شام میں بظاہر اسرائیلی فضائیہ کے حملے میں 19 ایران حمایت یافتہ جنگجو ہلاک ہو گئے ہیں۔

علی الصبح ہونے والے اس حملے میں شام کے صوبے دیر ایزور کے علاقے البو کمال کے نواح میں واقع پوزیشنز کو نشانہ بنایا گیا۔ سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق ہلاک ہونے والے جنگجوؤں میں اکثریت پاکستانیوں کی ہے۔

شامی میڈیا نے اس حملے کے حوالے سے کوئی خبر نہیں دی اور اسرائیلی ایسے انفرادی حملوں کی ذمہ داری کم ہی قبول کرتا ہے لیکن آبزرویٹری کے مطابق اسرائیل ہفتے سے اب تک شام میں ایران کی حمایت یافتہ ملیشیاز پر دو حملے کر چکا ہے۔

وار مانیٹر کے مطابق بدھ کو شامی دارالحکومت دمشق کے قریب ہونے والے ایک حملے میں آٹھ جنگجو ہلاک ہو گئے تھے۔

آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق ہفتے کی رات کو البوکمال میں ہونے والے حملے میں 14 ایرانی حمایت یافتہ جنگجو ہلاک ہوئے جن میں عراقی اور افغان شامل تھے۔

ایران، شام میں صدر بشارالاسد کی حکومت کی حمایت کرتا ہے۔ یہ حملے اقوام متحدہ میں اسرائیلی سفیر گیلاد ایردن کے اس مطالبے کے بعد کیے گئے ہیں جس میں انہوں نے سکیورٹی کونسل سے شام میں موجود ایرانی فورسز کو بے دخل کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

سکیورٹی کونسل کو لکھے گئے ان کے خط میں کہنا تھا کہ ’اسرائیل شام سے ایران کی حمایت یافتہ پراکسیز اور ایرانی پاسداران انقلاب کے ساز و سامان کی مکمل بے دخلی چاہتا ہے۔‘

شام میں سال 2011 سے جاری خانہ جنگی کے دوران اسرائیل شامل میں سینکڑوں حملے کر چکا ہے جن میں ایرانی فورسز، حزب اللہ کے جنگجوؤں اور شامی حکومت کی فوج کو نشانہ بنایا جا چکا ہے۔

شامی جنگ میں اب تک تین لاکھ 80 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ لاکھوں افراد بے گھر بھی ہو چکے ہیں۔

زیادہ پڑھی جانے والی دنیا