فواد چوہدری نے وزیرِ اطلاعات بننے کی تصدیق کر دی

فواد چوہدری اس سے قبل بھی تحریکِ انصاف حکومت کے اگست 2018 میں قیام سے لے کر اپریل 2019 تک وزیر اطلاعات رہ چکے ہیں۔

فواد چوہدری سائنس اور ٹیکنالوجی کے وزیر کی حیثیت سے بھی خبروں میں اِن رہتے تھے۔ (اے ایف پی)

وزیرِ برائے سائنس اور ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے انڈپینڈنٹ اردو کو بتایا ہے کہ انہیں وزارت اطلاعات کا قلمدان مل چکا ہے۔

حالیہ وزیر اطلاعات شبلی فراز 11 مارچ کے بعد سے اپنے عہدے پر فعال نہیں رہے ہیں، اور ان کی جگہ کابینہ کی میٹنگ کی بریفنگ فواد چوہدری ہی دیتے رہے ہیں۔

فواد چوہدری کو اطلاعات و نشریات کی وزارت کا اضافی چارج دیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ ان کے پاس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی وزارت پہلے سے موجود ہے جس میں وہ خاصے فعال ہیں اور خاص طور پر قمری مہینوں کے اعلان کے سلسلے میں میڈیا پر اِن رہتے ہیں۔

فواد چوہدری اس سے قبل بھی وزیر اطلاعات رہ چکے ہیں۔ موجودہ حکومت کے اقتدارمیں آنے کے بعد فواد چوہدری کو وزارت اطلاعات و نشریات کی ذمہ داری سونپی گئی تھی چونکہ فواد چوہدری اس سے قبل تحریک انصاف کے ترجمان بھی تھے اس لیے ان کو اس وزارت کے لیے موزوں ترین سمجھا گیا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

اگست 2018 سے اپریل 2019 تک وزیر اطلاعات رہنے کے بعد ان سے وزارت لے لی گئی اور فردوس عاشق اعوان کو اطلاعات و نشریات کے لیے وزیراعظم کی معاون خصوصی بنا دیا گیا، جبکہ فواد چوہدری کو سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی وزارت دے دی گئی۔

ذرائع کے مطابق اس وقت فواد چوہدری سے اطلاعات کا قلمدان لینے کی وجہ جماعت کے اراکین کے مابین بعض معاملات پر اختلافات تھے۔

واضح رہے کہ سابق وزیر اطلاعات شبلی فراز  11 مارچ  کی رات 12 بجے چھ سال کی مدت ختم ہونے پر سینیٹ سے ریٹائر ہو گئے تھے جس کے باعث بطور سینیٹر ریٹائر ہونے کے بعد ان کا وفاقی وزیر اطلاعات کاعہدہ عملًا اور آئینی طور پر غیر فعال ہو گیا تھا۔ تاہم وہ تین مارچ کو ہونے والے سینیٹ الیکشن میں دوبارہ سینیٹر منتخب ہوئے تھے اور 12 مارچ کو انہوں نے دوسری بار سینیٹر کا حلف اٹھا لیا تھا لیکن ان کی وزارت کا نوٹیفیکیشن دوبارہ جاری نہیں ہوا۔

زیادہ پڑھی جانے والی سیاست