گلیشیر پگھلنے سے سوئٹزرلینڈ اور اٹلی کے درمیان سرحد تبدیل

جنوبی سوئٹزرلینڈ کے شہر والیس کی میونسپلٹی زرمت کے جنوب میں واقع تھیوڈل گلیشیر آہستہ آہستہ اپنی جگہ تبدیل کر رہا ہے، سرحدیں اس کی نکاسی آب والی نالیوں کے ساتھ ساتھ چلتی ہیں۔

شمال مغربی اٹلی میں کوہ الپس (فائل فوٹو: اے ایف پی، 08052021)

یورپ کے الپس پہاڑی سلسلے میں گلیشیر پگھلنے کی وجہ سے سوئٹزرلینڈ کے ساتھ اٹلی کی سرحد منتقل ہونے سے ملک کے پہاڑی علاقے میں بنے ایک ہوٹل کا مقام متنازع ہو گیا ہے۔

جنوبی سوئٹزرلینڈ کے شہر والیس کی میونسپلٹی زرمت کے جنوب میں واقع تھیوڈل گلیشیر آہستہ آہستہ اپنی جگہ تبدیل کر رہا ہے۔ سرحدیں اس کی نکاسی آب والی نالیوں کے ساتھ ساتھ چلتی ہیں۔

گلیشیر سے پگھلنے والا پانی نکاسی آب کے راستوں سے بہہ کر پہاڑ کے دونوں طرف کسی نہ کسی ملک کی طرف چلا جاتا ہے اور کسی دریا یا جھیل میں گرتا ہے۔

تھیوڈل گلیشیر کی حرکت کا مطلب ہے کہ واٹرشیڈ(تالاب نما جگہ) تھوڑا سا اٹلی کی وادی آوستا میں ایک ہوٹل ریفوگیو گوئس ڈیل سروینو کی طرف منتقل ہو گیا ہے جو پہاڑی سلسلے میں اونچے مقام پر سیاحوں کے ٹھہرنے کی جگہ ہے۔

ریفوگیو گوئس ڈیل سروینو جس کی لمبائی 3480 میٹر ہے۔ پینین الپس میں مونٹی روزا ماسیف کے اطالوی کنارے پر ٹیسٹا گریگیا چوٹی کے قریب ہے، کو ہمیشہ اٹلی کا حصہ سمجھا جاتا رہا ہے۔

ایجنسی فرانس پریس کی رپورٹ کے مطابق لیکن کچھ لوگ سوال پوچھ رہے ہیں کہ جب تھیوڈل گلیشیرز کا واٹر شیڈ عمارت کے نیچے منتقل ہو گیا ہے۔59 سالہ سیاح فریڈرک نے ریستوران کے حالیہ دورے کے دوران پوچھا،’تو - کیا ہم سوئٹزرلینڈ میں ہیں؟‘

سوئٹزرلینڈ اور اٹلی اس زمین پر ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت کرتے رہے ہیں۔ بات چیت 2018 میں شروع ہوئی اور گزشتہ سال ختم ہوئی، اگرچہ اس بات چیت کے نتائج ابھی تک نہیں بتائے گئے۔

دونوں فریقین کے درمیان نومبر میں ایک معاہدہ ہوا تھا لیکن تفصیلات کو کم ازکم 2023 تک افشاں نہیں کیا جائے۔ جب سوئس حکومت اس معاہدے پر دستخط کرے گی۔

سوئٹزرلینڈ کی قومی نقشہ ساز ایجنسی سوئسٹوپو کے چیف بارڈر عہدیدار ایلین ویچ نے کہا کہ ہم نے درمیانی مقام پر اتفاق کیا ہے۔

اٹلی میں ایلین ویچ کے ہم منصب’پیچیدہ بین الاقوامی صورتحال کی وجہ سے‘ کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کردیا ہے۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

یہ معاملہ اس لیے سامنے آیا کہ یہ علاقہ جس کی آمدنی کا انحصار سیاحت پر ہے، دنیا کے سب سے بڑے سکائی ریزورٹس میں سے ایک کی انتہائی بلندی پر واقع ہے، جہاں ایک کیبل کار سٹیشن تعمیر کی بھی جارہی ہے۔

ریفوگیو گوئس ڈیل سروینو 1984 میں تعمیر کیا گیا تھا۔ اس وقت اس کے40کمرے اور لکڑی کی لمبی میزیں اطالوی علاقے میں تھیں۔

اب اس کا تقریبا دو تہائی حصہ، بشمول ریستوران کے زیادہ تر کمرے، تکنیکی طور پر جنوبی سوئٹزرلینڈ کی زمین پر ہیں۔

لیکن اس ہوٹل کے 59 سالہ نگران لوسیو ٹرککو بدستور انکاری ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ پناہ گاہ ہمیشہ اطالوی رہے گی کیونکہ ہم اطالوی ہیں۔ مینیو اطالوی ہے، شراب اطالوی ہے اور ٹیکس اطالوی ہیں۔

© The Independent

زیادہ پڑھی جانے والی یورپ