گھوٹکی کے رہائشی نے ’ہاجکنز لمفوما‘ کینسر کو کیسے شکست دی؟

عاقب مختیار نے بتایا: ’اب بھی مجھے وہ دن یاد ہے جب ہسپتال کے لان میں بیٹھا تھا تو بے اختیار آنکھوں سے آنسو جاری تھے کیونکہ ہمارے معاشرے میں کینسر کی بیماری کا ہونا بس موت کا پیغام ہوتا ہے۔‘

عاقب اب مکمل طور پر صحت یاب ہوکر اپنی معمول کی زندگی گزار رہے ہیں(عمران ملک)

پاکستان کے شہر گھوٹکی کے رہائشی عاقب مختیار میں 2018 میں کینسر کی ایک مخصوص اور مہلک قسم ’ہاجکنز لمفوما‘ کی تشخص ہوئی، جس کے بعد انہوں نے ہمت سے اس کا مقابلہ کرتے ہوئے کیمو تھراپی سے علاج شروع کیا۔

تاہم مرض کی شدت کے بعد انہیں ایڈوانس انٹینس کیمو تھراپی جیسے تکلیف دہ عمل سے گزرنا پڑا اور اب نو ماہ کے مسلسل علاج کے بعد وہ نارمل زندگی گزار رہے ہیں۔

عاقب مختیار، جو ایک نجی کمپنی میں ملازمت کرتے ہیں، نے انڈپینڈنٹ اردو سے گفتگو میں اس کینسر کی علامات کے حوالے سے بتایا کہ انہیں مسلسل بخار، رات کو سوتے ہوئے بہت زیادہ پسینے آنا اور گردن کے قریب غیر معمولی سوزش کی شکایت رہی۔

وہ کہتے ہیں کہ جب انہوں نے ای این ٹی ڈاکٹر سے چیک اپ شروع کروایا تو اس وقت انہیں اندازہ نہیں تھا کہ وہ کینسر جیسے مرض کے شکار ہوچکے ہیں۔

’ڈاکٹروں نے رپورٹس کی روشنی میں مجھے علاج کے لیے کراچی جانے کا کہا جہاں اس حوالے سے مزید ٹیسٹ کروائے گئے۔‘

عاقب نے بتایا: ’میں معمول کا ٹیسٹ سمجھ کر اکیلا ہی کراچی گیا اور ڈاکٹروں نے جب رپورٹس کے بعد مجھے اس مرض کا بتایا تو کچھ لمحوں کے لیے میں گم سم ہو گیا۔‘

بقول عاقب: ’اب بھی مجھے وہ دن یاد ہے جب ہسپتال کے لان میں بیٹھا تھا تو بے اختیار آنکھوں سے آنسو جاری تھے کیونکہ ہمارے معاشرے میں کینسر کی بیماری کا ہونا بس موت کا پیغام ہوتا ہے۔‘

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

وہ بتاتے ہیں کہ ’اس کے بعد میں نے اپنے والد اور بھائی کو بتایا، جو فوری طور پر کراچی آئے اور مجھے حوصلہ دیا۔

’اس وقت میری شادی کو صرف دو سال ہی ہوئے تھے، میرے دو چھوٹے بچے تھے۔ جب گھر آکر اپنی بیوی کو بتایا تو وہ بھی بہت زیادہ پریشان ہوئی مگر مجھے ظاہر نہیں ہونے دیا بلکہ مجھے حوصلہ دیتی رہی۔‘

عاقب مختیار نے بتایا کہ علاج کے لیے جب انہیں مسلسل کراچی میں رہنے کی ضرورت پیش آئی تو کراچی میں رہائش بھی ایک مسئلہ تھی۔

’ایک روز جب کیمو تھراپی کے بعد رات کو طبیعت اچانک خراب ہوئی تو بھائی بہت مشکل سے ہسپتال لے کر پہنچے۔ اس وقت میں نے بھائی سے کہا کہ بس چھوڑتے ہیں علاج، قسمت میں ہوا تو بچ جاؤں گا۔‘

وہ کہتے ہیں کہ ’اس تکلیف دہ صورت حال میں میرے بھائی اور میری بیوی نے مجھے بہت حوصلہ دیا جبکہ میرے دو دوستوں نے بھی مجھے اس کرب کی صورت حال سے نکلنے میں مدد کی۔‘

عاقب اب مکمل طور پر صحت یاب ہوکر اپنی معمول کی زندگی گزار رہے ہیں۔

ہاجکنز لمفوما کیا ہے؟

ہاجکنز لمفوما ایک ایسا کینسر ہے، جو انسان کی لمف نوڈز کو متاثر کرتا ہے۔ لمف نوڈز لمفیٹک نظام یا نظام سیالہ کا حصہ ہوتی ہیں، جو ہمارے مدافعتی نظام کا ایک حصہ ہے اور جسم میں بیماریوں اور انفیکشن سے لڑنے والے خلیے تیار کرتی ہیں۔

طبی تحقیق پر کام کرنے والے امریکی ادارے میو کلینک کے مطابق اس کینسر میں لمفوسائٹس نامی خون کے سفید خلیوں کی پیداوار بے قابو ہو جاتی ہے، جس سے لمف نوڈز اور جسم کے دوسرے حصوں میں سوجن اور ٹیومر بن جاتے ہیں۔

زیادہ پڑھی جانے والی میری کہانی