فاف ڈوپلیسی پاکستان میں پہلا ٹیسٹ میچ کھیلنے کے لیے بیتاب

فاف ڈوپلیسی کہتے ہیں کہ یہ پاکستانیوں کے لیے بہت خوشی کا موقع ہے، یہاں کی ایک نسل اپنے سٹار کرکٹرز کو اپنے میدانوں میں کھیلتا نہیں دیکھ سکی۔

فاف ڈوپلیسی (اے ایف پی)

پاکستان پہنچنے والے جنوبی افریقہ کے سکواڈ میں شامل فاف ڈوپلیسی کا یہ گذشتہ چار سال میں پاکستان کا تیسرا دورہ ہے۔

تجربہ کار مڈل آرڈر بیٹسمین نےآئی سی سی ورلڈ الیون کرکٹ ٹیم کی قیادت کرتے ہوئے تین ٹی ٹونٹی میچز کھیلنے کے لیے سال 2017 میں لاہور کا دورہ کیا۔

فاف ڈوپلسی دوسری مرتبہ گذشتہ سال ایچ بی ایل پی ایس ایل میں شرکت کی غرض سے پاکستان آئے۔ انہوں نے کراچی میں کھیلے گئے لیگ کے پلے آف میچز میں پشاور زلمی کی نمائندگی کی۔

چھبیس جنوری سے نیشنل سٹیڈیم کراچی میں شروع ہونے والا ٹیسٹ میچ جہاں فاف ڈوپلیسی کے ٹیسٹ کیرئیر کا 68واں میچ ہوگا تو وہیں یہ 36 سالہ بیٹسمین کا پاکستان کی سرزمین پر پہلا ٹیسٹ میچ ہوگا۔

اگرچہ گذشتہ دوروں نے فاف ڈوپلیسی کو پاکستان میں سکیورٹی معاملات پر اعتماد فراہم کیا مگر جنوبی افریقہ کے سابق ٹیسٹ کپتان نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں اپنے آخری دورہ پاکستان کے وقت اندازہ بھی نہیں تھا کہ وہ دو ماہ بعد ہی طویل طرز کی کرکٹ کھیلنے کے لیے یہاں واپس آئیں گے۔

فاف ڈوپلیسی پاکستان کے خلاف اب تک سات ٹیسٹ میچز میں 27.33 کی اوسط سے 246 رنز بناچکے ہیں۔ اس میں ایک سنچری بھی شامل ہے۔

ان سات ٹیسٹ میچز میں سے دو متحدہ عرب امارات میں کھیلے گئے جہاں پاکستان نے سال 2010 سے 2019 تک اپنی ہوم کرکٹ کھیلی۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

فاف ڈوپلیسی کا کہنا ہے کہ یہ ایک ایسا لمحہ ہے کہ جو انہوں نے اب تک اپنی زندگی میں نہیں دیکھا، یہ تو جانتا تھا کہ یہاں محدود طرز کی کرکٹ تو کھیلی جارہی ہے مگریہ اندازہ نہیں تھا کہ  اتنی جلدی طویل طرز کی کرکٹ بھی کھیلی جائے گی۔

فاف ڈوپلیسی نے کہا کہ وہ اب پاکستان میں ٹیسٹ کرکٹ کے دوبارہ آغاز کے منتظر ہیں اور انہیں یقین ہے کہ یہ بالکل 13 سال پہلے جیسا آغاز ہی ہوگا، یہاں وکٹیں فلیٹ ہیں، لہٰذا یہاں ہم بلے بازوں کے لیے رنز بنانے کے مواقع بھی زیادہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں نوجوانوں کو کرکٹ سے متاثر کرنے کے لیے ضروری ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم  اپنی سرزمین پر کرکٹ کھیلے اور امید ہے کہ جنوبی افریقہ کرکٹ ٹیم کا یہ دورہ دیگر بین الاقوامی کرکٹ ٹیموں کو پاکستان لانے میں مدد کرے گا۔

فاف ڈوپلیسی نے کہاکہ پاکستان نے گذشتہ 11 سال اپنی ہوم کرکٹ متحدہ عرب امارات میں کھیلی، جس کی وجہ سے پاکستان کرکٹ کے فینز کی ایک نسل اپنے سٹار کرکٹرز کو اپنے گراؤنڈز میں کھیلتا نہیں دیکھ سکی، یہ ضروری ہے کہ پاکستان اپنی ہوم کرکٹ اپنے ملک میں ہی کھیلے۔

سابق ٹیسٹ کپتان نے کہا کہ دیگر قوموں کی طرح پاکستانی فینز بھی اپنی ٹیم پر بہت فخر محسوس کرتے ہیں، جب بھی برصغیر کا دورہ کریں ہمیں یہاں کرکٹ کے بہت پرجوش مداح دیکھنے کو ملتے ہیں، یہ فینز ہر میچ دیکھنے آتے ہیں اور ہر میچ میں اپنی ٹیم کو سپورٹ کرتے ہیں، دن بھر ان کا جوش اور جذبہ دیدنی ہوتا ہے۔

فاف  ڈوپلیسی نے کہا کہ اس تناظر میں یہ پاکستانیوں کے لیے ایک بہت خوشی کا موقع ہے۔

دوہزار سترہ میں آئی سی سی ورلڈالیون ٹیم کے ہمراہ پاکستان کا دورہ کرنے والے فاف ڈوپلیسی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کرکٹ کی بحالی کی غرض سے ورلڈ الیون کرکٹ ٹیم دورہ بہت اہم تھا، اس وقت پاکستان میں کسی قسم کی کرکٹ نہیں ہورہی تھی۔

مڈل آرڈر بیٹسمین نے کہاکہ یہ وہ لمحہ تھا کہ جب دنیا کے مختلف کرکٹرز یہاں کرکٹ کھیلنے آئے، انہوں نے اپنی انکھوں سے یہاں کے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیا، جس سے ان کے اعتماد میں اضافہ ہوا۔

انہوں نے کہا کہ وہ اس وقت اس ٹیم کی قیادت کر رہے تھے، جنوبی افریقہ واپس لوٹنے پر انہوں نے بتایا کہ وہ پاکستان میں محفوظ تھے،جس سے یقیناََ بہت فرق پڑا ہے۔

دونوں ٹیموں کے مابین سیریز کا دوسرا ٹیسٹ میچ 4 فروری سے راولپنڈی میں شروع ہوگا۔

زیادہ پڑھی جانے والی کرکٹ