فلسطینی مزاحمت کاروں کو اسلحہ پہنچانے کا الزام، اردنی رکن پارلیمان اسرائیل میں گرفتار

اسرائیل نے اردن کے رکن پارلیمان عماد العدوان پر مقبوضہ مغربی کنارے میں اسلحہ پہنچانے کا الزام عائد کرتے ہوئے انہیں گرفتار کر لیا۔

عماد العدوان جن کی عمر 34 سال ہے السلط کے علاقے سے تعلق رکھتے ہیں اور بین الااقوامی قانون میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کر چکے ہیں(تصویر: امیر خلیفہ)

اسرائیل نے اردن کے رکن پارلیمان عماد العدوان پر مقبوضہ مغربی کنارے میں اسلحہ پہنچانے کا الزام عائد کرتے ہوئے انہیں گرفتار کر لیا۔

عرب نیوز کے مطابق سوشل میڈیا پر گردش کرتی اطلاعات میں دعوی کیا جا رہا ہے کہ اسرائیلی حکام نے مبینہ طور پر اسلحہ پہنچانے کی یہ کوشش کنگ حسین بارڈر کراسنگ کے پل پر ناکام بنائی ہے۔

رپورٹس کے مطابق اسلحہ اس کار سے برآمد ہوا ہے جو اردن کے رکن پارلیمان کی ملکیت تھی۔

عماد العدوان جن کی عمر 34 سال ہے السلط کے علاقے سے تعلق رکھتے ہیں اور بین الااقوامی قانون میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کر چکے ہیں۔

وہ اردنی پارلیمان کی فلسطین کمیٹی کے رکن بھی ہیں۔

ایک عہدیدار نے عرب نیوز کو تصدیق کی ہے کہ اردن کی حکومت کو عماد العدوان کی گرفتاری سے متعلق آگاہ کر دیا گیا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

عہدیدار نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر رکن پارلیمان کا نام بتائے بغیر کہا کہ اردن کی حکومت اپنے رکن پارلیمان کی رہائی کو یقینی بنانے کے لیے کام کر رہی ہے۔

وزارت امور خارجہ کے ترجمان سنان المجالی کا کہنا ہے کہ ان کی وزارت اس واقعے کے حوالے سے کام کر رہی ہے۔

اردن کے ایک اور رکن پارلیمان اندريه حوارى نے اپنے ساتھی رکن پارلیمان کو ’ہیرو‘ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ’فلسطینی مزاحمت کاروں‘ کو اسلحہ پہنچا رہے تھے۔

اسرائیل میں گرفتار رکن پارلیمان کے قبیلے کے افراد نے اردن اور مقبوضہ مغربی کنارے کی سرحد پر واقع اس پل کی طرف مارچ کر کے عماد عدوان سے اظہار یکجہتی کیا ہے۔

اردن کے اراکین پارلیمان نے اپنی حکومت سے اپیل کی ہے وہ ان کے ساتھی کو جلد گھر لانے کے لیے اقدامات کریں۔

زیادہ پڑھی جانے والی دنیا