تربیلا اور منگلا ڈیم 100 فیصد بھر گئے ہیں: حکام

پاکستانی حکام کے مطابق ملک کے تمام اہم دریاؤں کے بالائی علاقوں میں 22 اگست سے بارشوں میں اضافے کا امکان ہے جو کہ 28 اگست تک جاری رہیں گی

تربیلا ڈیم کے سپل ویز 24 اگست 2010 کو پانی بھر جانے کی وجہ سے کھول دیے گئے ہیں (فائل فوٹو/اے ایف پی)

پاکستان میں حالیہ مون سون بارشوں کے بعد صوبہ پنجاب میں آفات سے نمٹنے کے صوبائی ادارے ’پی ڈی ایم اے‘ نے منگل کو کہا ہے کہ ملک کے دونوں بڑے ڈیم ’منگلا اور تربیلا ڈیم  100 فیصد فل چکے ہیں۔‘

پی ڈی ایم اے کے بیان میں کہا گیا کہ تمام اہم دریاؤں کے بالائی علاقوں میں 22 اگست سے بارشوں میں اضافے کا امکان ہے جو کہ 28 اگست تک جاری رہیں گی۔

پاکستانی حکام کہہ چکے ہیں کہ کہ انڈیا کی جانب سے دریائے ستلج میں پانی چھوڑنے کے بعد دریا میں سیلاب کی صورت حال برقرار ہے جس سے لگ بھگ 80 ہزار افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ہے۔

پی ڈی ایم اے کے بیان میں کہا گیا کہ ’سیلابی صورت حال کے پیش نظر انتظامیہ ہائی الرٹ ہے جب کہ انتظامیہ عوام کو ایمرجنسی صورت حال سے آگاہ کرنے کے لئے اقدامات کر رہی ہے۔‘

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

آفات سے نمٹنے کے صوبائی ادارے کے ترجمان عمران قریشی نے منگل کو ایک بیان میں کہا کہ ’سوشل میڈیا، ٹی وی اخبارات کے علاوہ مساجد میں اعلانات کے ذریعے بھی آگاہی مہم چلائی جارہی ہے۔‘

پی ڈی ایم اے کے مطابق  گنڈا سنگھ کے مقام پر اونچے درجے کا سیلاب ہے جہاں سے 1 لاکھ 29 ہزار کیوسک پانی کا ریلہ گزر رہا ہے۔ اس کے علاوہ

ہیڈ سلیمانکی کے مقام پر بھی انتہائی اونچے درجے کا سیلاب ہے۔

پاکستان میں اس وقت مون سون کی بارشیں ہو رہی ہیں جو جون کے آخر میں شروع ہوئی تھیں۔ بارشوں نے کئی علاقوں میں سیلابی صورت حال پیدا کر رکھی ہے اور رواں سال مون سون کے دوران 200 افراد جان سے جا چکے ہیں۔

گذشتہ سال بھی پاکستان میں شدید بارشوں اور سیلابی صورت حال سے ملک کا ایک تہائی حصہ متاثر ہوا تھا اور اور 1739 افراد جان سے گئے تھے۔

حکام کے مطابق گذشتہ سال کے سیلاب سے پاکستان کو 30 ارب ڈالر کا نقصان پہنچا تھا۔

زیادہ پڑھی جانے والی پاکستان