بلوچستان میں سمگلروں کا اے این ایف کی ٹیم پر حملہ، دو اہلکار ہلاک

تفصیل کے مطابق اے این ایف کے جوان خفیہ اطلاع پر ماشکیل سے بھاری مقدار میں منشیات برآمد کر کے واپس آ رہے تھے کہ پچاس سے ساٹھ حملہ آوروں پر مشتمل گروہ نے مہراب لوگ ایریا کے قریب ٹیم پر گھات لگا کر حملہ کر دیا۔

حملہ آوروں نے راکٹ لانچر کے ذریعے دو گاڑیاں بھی مکمل طور پر تباہ کر دیں (اے این ایف)

پاکستان کے جنوب مغربی صوبے بلوچستان میں اینٹی نارکاٹکس فورس (اے این ایف) کی ایک ٹیم پر حملے میں دو جوان ہلاک جبکہ چھ زخمی ہوئے ہیں۔

اے این ایف کی جانب سے کوئٹہ میں جاری ایک بیان کے مطابق ساڑھے تین گھنٹے تک جاری رہنے والی یہ جھڑپ پنجگور کے علاقے ماشکیل میں ہوئی جہاں بھاری مقدار میں منشیات برآمد کر کے آنے والے اے این ایف کے جوانوں پر سمگلروں اور عسکریت پسندوں کا مشترکہ حملہ ہوا۔

 اے این ایف کے ترجمان کے مطابق ہلاک ہونے والے اہلکاروں میں مردان کے رہائشی کانسٹیبل ڈرائیور عامر نواز اور لودھراں کے رہائشی کانسٹیبل محمد کامران شامل ہیں۔

تفصیل کے مطابق اے این ایف کے جوان خفیہ اطلاع پر ماشکیل سے بھاری مقدار میں منشیات برآمد کر کے واپس آ رہے تھے کہ پچاس سے ساٹھ حملہ آوروں پر مشتمل گروہ نے مہراب لوگ ایریا کے قریب ٹیم پر گھات لگا کر حملہ کر دیا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

ایران کے ساتھ لگا صوبہ بلوچستان منشیات کے سمگلروں کے لیے بین الاقوامی منڈیوں تک رسائی کا بڑا روٹ ہے۔

اے این ایف کی مطابق دہشت گردوں اور سمگلروں نے حملے میں چھوٹے بڑے ہتھیاروں کا بے دریغ استعمال کیا۔ حملہ آوروں نے راکٹ لانچر کے ذریعے دو گاڑیاں بھی مکمل طور پر تباہ کر دیں۔

اس موقع پر ایف سی بلوچستان ساؤتھ کے جوانوں نے موقع پر پہنچ کر اے این ایف کے جوانوں کی مدد کی۔ ان کے پہنچنے پر پر حملہ آور موقع سے فرار ہو گئے۔

مقابلے میں زخمی ہونے والے جوانوں کو قریبی ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

ڈی جی اے این ایف نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے حملہ آوروں کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایات جاری کر دیں ہیں۔

زیادہ پڑھی جانے والی پاکستان