امارات: لگژری کار شوروم میں متکبرانہ ویڈیو بنانے والا شخص گرفتار

ویڈیو میں ایک شخص کو نوٹوں کی گڈیاں ساتھ لانے والے دو ملازمین کے ہمراہ پیسے اڑاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔

گرفتار شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی (سکرین گریب)

متحدہ عرب امارات میں الیکٹرانک کرائم اور افواہوں کے انسدادی محکمے نے اتوار کو ’رائے عامہ متاثر کرنے اور عوامی مفادات کے لیے نقصان دہ‘ ویڈیو بنانے اور اسے پوسٹ کرنے پر ایک شخص کو گرفتار کر لیا۔

متحدہ عرب امارات کے خبر رساں ادارے ’وام‘ نے اپنی رپورٹ میں گرفتار شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی۔

النيابة العامة في الإمارات تأمر بحبس مقيم، بعد ظهوره بمقطع داخل معرض للسيارات الفارهة.
pic.twitter.com/DWvNQxNLyd

ویڈیو میں مذکورہ شخص ایسی حرکات کرتے نظر آتے ہیں جو ’اماراتی شہریوں کی ناشائستہ اور مضحکہ خیز ساکھ‘ بنانے کی کوشش نظر آتی ہیں۔

ویڈیو میں عرب امارات کے قومی لباس میں ملبوس ایک شخص کو پرتعیش کاروں کے شوروم میں داخل ہوتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے، جہاں وہ ایک خاتون ملازم کو مخاطب کرتے ہیں کہ اس شوروم کا مینیجر کہاں ہے، خواتین کے بتانے پر وہ انہیں نوٹوں کی ایک گڈی تھماتے ہوئے کہتے ہیں کہ اس کی کافی پی لینا۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

مذکورہ شخص شوروم کے مالک سے گفتگو میں ’رعونت‘ سے مہنگی ترین کار کی قیمت معلوم کرتے ہیں اور جب انہیں ایک کار کی قیمت 22 لاکھ درہم بتائی جاتی ہے تو کہتے ہیں کہ کچھ اور دکھائیں یہ تو میرا ڈرائیور چلائے گا۔

ویڈیو میں ان کے ہمراہ دو لوگ بظاہر نوٹوں کی گڈیاں اٹھائے گھومتے نظر آتے ہیں۔

متحدہ عرب امارات میں اٹارنی جنرل آفس کے فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن کے مطابق یہ ویڈیو متحدہ عرب امارات کے مروج سوشل میڈیا اخلاقیات سے متصادم ہے اور معاشرے کے لیے تکلیف دہ ہے۔

ویڈیو پوسٹ کرنے والے شخص سے تفتیش جاری ہے جبکہ شوروم کے مالک کو بھی طلب کر لیا گیا ہے۔

پبلک پراسیکیوشن نے متحدہ عرب امارات میں سوشل میڈیا صارفین پر زور دیا کہ وہ سوشل میڈیا پر مواد پوسٹ کرتے وقت قانونی اور اخلاقی ضوابط کی پابندی کریں۔

زیادہ پڑھی جانے والی ایشیا