ٹوئٹر سیاست دانوں کے جھوٹ کو ’نارنجی رنگ‘ میں دکھائے گا

جھوٹ اور غلط بیانی پر مبنی ٹویٹس کو دیکھے جانے کی تعداد کو بھی محدود کر دیا جائے گا۔

ٹوئٹر نے تصدیق کی ہے وہ اس فیچر کے حوالے سے ابھی ابتدائی سطح پر سوچ رہے ہیں (فائل تصویر: اے ایف پی)

ٹوئٹر جھوٹ اور غلط خبروں پر مبنی مواد کو شوخ نارنجی اور سرخ رنگ میں دکھا سکتا ہے۔

ایک لیک کے مطابق یہ منصوبہ ٹوئٹر کی جانب سے جھوٹی خبروں سے نمٹنے کے طریقہ کار کا ایک حصہ ہے۔

این بی سی نیوز پر دکھائے جانے والے اس منصوبے کے آزمائشی ڈیزائن کے مطابق مصدقہ فیکٹ چیکرز اور صحافی کسی مواد کے عین نیچے اس کے غلط ہونے کی نشاندہی کر سکتے ہیں۔ دوسرے افراد کے لیے بھی ایسی پوسٹس پر فیڈ بیک دینے کے لیے پارٹیسپیٹ یعنی ’حصہ لیجیے‘ کا بٹن رکھا گیا ہے۔

جھوٹی خبریں 2019 کے عام انتخابات کے دوران بھی توجہ کا مرکز رہی تھیں اور اس سال امریکہ میں ہونے والے صدارتی انتخاب میں بھی اس حوالے سے خدشات پائے جاتے ہیں۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

قابل اعتراض مواد کو اس جملے کے ساتھ واضح کیا جائے گا: ’صارفین نے اس ٹویٹ کو ٹوئٹر قواعد کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے نقصان دہ اور جھوٹی خبر قرار دیا ہے۔ اس ٹویٹ کو دیکھے جانے کی تعداد کو محدود کر دیا جائے گا۔‘

اس آزمائشی مشق میں امریکی صدارتی انتخاب کی دوڑ میں شامل سینیٹر برنی سینڈرز کی اسلحہ فروخت کے حوالے سے پس منظر کی جانچ پڑتال اور امریکی ایوان نمائندگان کے رکن کیون میکارتھی کی خبردار کرنے والوں (Whislte-blower) سے متعلق ٹویٹس کو شامل کیا گیا ہے۔

ٹوئٹر نے تصدیق کی ہے وہ اس فیچر کے حوالے سے ابھی ابتدائی سطح پر سوچ رہے ہیں۔ ٹیک کمپنی کے مطابق ابھی تک اس پروجیکٹ کے لیے عملے کی بھرتی بھی نہیں کی گئی۔

ٹوئٹر ترجمان کے مطابق: ’ہم ٹویٹس کے سیاق و سباق اور غلط معلومات کے مسائل سے نمٹنے کے لیے کئی طریقوں پر غور کر رہے ہیں۔ یہ آزمائشی مشق ان میں سے صرف ایک طریقے کے بارے میں تھی جس میں صارفین کا فیڈ بیک شامل تھا۔ غلط خبریں ایک سنجیدہ معاملہ ہے اور ہم اس سے نمٹنے کے لیے کئی طریقہ کار استعمال کریں گے۔‘


اس رپورٹ میں نیوز ایجنسیز کی معاونت شامل ہے۔

© The Independent

زیادہ پڑھی جانے والی ٹیکنالوجی