اب آپ اس ناگوار گروپ چیٹ کو ہمیشہ کے لیے میوٹ کر سکتے ہیں

واٹس ایپ نے آخر کار ایک نئی اپ ڈیٹ متعارف کروا دی ہے جس کے ذریعے صارفین ہمیشہ کے لیے چیٹس کو میوٹ کر سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ کالنگ اور تصاویر کے لیے شامل کیے گئے نئے فیچرز کے بارے میں اس رپورٹ میں جانیے۔

یہ واحد تبدیلی نہیں جو واٹس ایپ اپنے پلیٹ فارم  میں کر رہا ہے۔ (اے ایف پی)

میسنجنگ پلیٹ فارم واٹس ایپ نے آخر کار ایک نئی اپ ڈیٹ متعارف کروا دی ہے جس کے ذریعے صارفین ہمیشہ کے لیے چیٹس کو میوٹ کر سکتے ہیں۔

اس سے قبل صارفین صرف ایک سال تک کے لیے کسی ایک بندے سے چیٹ یا گروپ چیٹ میوٹ کر سکتے تھے۔  

اب گفتگو کو 365 دن تک بند کرنے کے آپشن کی جگہ ’ہمیشہ‘ کا آپشن ڈال دیا گیا ہے۔ اس کے پیچھے وجہ یہ دی گئی ہے کہ اگر آپ کسی کو ایک سال تک نہیں سننا چاہتے تو اس کا مطلب یہی ہے کہ آپ انہیں بالکل ہی نہیں سننا چاہتے ہوں گے۔

کسی بھی چیٹ کو میوٹ کرنے کے لیے صارفین کو اس چیٹ پر جا کر گروپ یا کانٹیکٹ کا نام دبانا ہوگا اور میوٹ کا بٹن دبا کر ’ہمیشہ‘ کا انتخاب کرنا ہوگا۔

یہ نیا فیچر آئی فون اور اینڈرائیڈ دونوں کے صارفین کے لیے دستیاب ہے۔

یہ واحد تبدیلی نہیں جو واٹس ایپ اپنے پلیٹ فارم  میں کر رہا ہے۔

فیس بک کی ملکیت میسنجنگ سروس اپنی فون کی ایپ میں دستایب وائس اور ویڈیو کالنگ فیچر کو اپنے ڈیسک ٹاپ ورژن پر بھی لا رہا ہے۔

واٹس ایپ کی آئی او ایس اور اینڈرائیڈ موبائل ایپ پر ویڈیو فیچر دستیاب ہے مگر ایک وقت میں صرف آٹھ لوگ ہی اس میں شامل ہو سکتے ہیں۔

مزید پڑھ

اس سیکشن میں متعلقہ حوالہ پوائنٹس شامل ہیں (Related Nodes field)

وہ ’ایکسپائر  ہونے والے میڈیا‘ کا فیچر بھی شامل کر رہا ہے جس کے ذریعے صارفین تصاویر بھیج سکیں گے جنہیں صرف ایک بار ہی دیکھا جا سکتا ہو، جیسے سنیپ چیٹ میں ہوتا ہے۔

جب یہ تصویر موصول کرنے والے صارف کے فون پر تب ہی دکھے گی جب وہ اس چیٹ میں موجود ہوں۔

جب وہ چیٹ چھوڑ کر جانے لگیں گے تو ایک سکرین پر میسج آئے گا: ’یہ میڈیا آپ کے چیٹ چھوڑنے کے بعد غائب ہو جائے گا۔‘

کرونا (کورونا) وائرس کی وبا کو مدنظر رکھتے ہوئے واٹس ایپ صارفین کو پیغامات میں غلط معلومات کے لیے سرچ بھی کرنے دے گا۔

یہ ایک ایسے فیچر سے جڑا ہے جس کے ذریعے واٹس ایپ بار بار فارورڈ کیے جانے والے میسیجز پر بھی نظر رکھے گا اور صارفین کے لیے ایک خاص بلیٹن جاری کرے جس میں انہیں اس پیغام میں کیے گے دعوں کے بارے میں محتاط ہونے پر زور دیا جائے گا۔

چیٹ میں ایک میگنیفائنگ گلاس جیسا بٹن ہوگا جس کے ذریعے صارفین ان مشکوک میسجز کے بارے میں خبریں یا معلومات کے دیگر ذرائعوں کو چیک کر سکیں گے۔

واٹس ایپ نے تصدیق کی ہےکہ وہ چیک کیے جانے والے میسجز کو پڑھتا نہیں۔

 

© The Independent

زیادہ پڑھی جانے والی ٹیکنالوجی